دہشت گردی کا خاتمہ باہمی تعاون سے ہی کیا جا سکتا ہے: پاک فوجی سربراہ

دوشنبے(تاجکستان):فوجی سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے تاجکستان کے دارالحکومت دوشنبے میں منعقدہ چار فریقی کاؤنٹر ٹیررازم کوآرڈینیشن مکینزم کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم افغانستان میں جاری جنگ کو پاکستان میں لانے کے متحمل نہیں ہو سکتے جبکہ افغانستان سے دہشت گردی کے خاتمے کے لئے افغان حکومت اور فوج کے ساتھ ہر ممکن تعاون کے لئے تیار ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ پاکستان مشترکہ سرحد پر سیکیورٹی اقدامات کر رہا ہے اور افغانستان کو بھی اپنی سرحد کو محفوظ بنانے کے لئے اقدامات کرنا ہوں گے۔
جنرل باجوا نے مزید کہا کہ افغان مہاجرین کی واپسی افغانستان میں مستقل اور دیر پا امن و امان کے قیام کے لئے اہم کردار ادا کر سکتی ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ دہشت گردی ایک کثیراقوامی مشترکہ خطرہ ہے اور اس کا خاتمہ مشترکہ تعاون کے ذریعے سے ہی ممکن ہے جس میں مشترکہ انٹیلی جنس شئیرنگ اور موثر بارڈر منیجمنٹ بہت ضروری ہے۔واضح رہے کہ اجلاس میں پاکستان کی نمائندگی جنرل قمر جاوید باجوہ، چین کی نمائندگی جنرل لی ڑو چنگ، تاجکستان کی نمائندگی جنرل صابرزادہ امام علی عبدالرحیم جبکہ افغانستان کی نمائندگی جنرل شریف یفتالی نے کی ہے۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Terrorism can only be defeated through intelligence sharing gen bajwa in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply