آفریدی کی رہائش گاہ پر شیر کی موجودگی کی تحقیقات کا حکم جاری

کراچی: سابق پاکستانی کرکٹ کپتان شاہد آفریدی کی رہائش گاہ پر شیر کی موجودگی کے معاملہ نے طول پکڑ لیا ہے اور سندھ وائلڈ لائف ڈپارٹمنٹ کے کنزرویٹر تاج محمد شیخ نے کہا کہ انہوں نے اس معاملہ کی تحقیقات کا حکم جاری کر دیا۔

انہوں نے کہا اگر شاہد آفریدی کے خلاف جرم ثابت ہو گیا تو ان کےخلاف مناسب قانونی کاروائی کی جائے گی۔واضح ہو کہ آفریدی اور ان کی 6سالہ بیٹی کو اپنے گھر کے لان میں ایک شیر اور ہرن کے ساتھ دیکھا گیا جس میں شیر اورآفریدی اور ان کی بیٹی کے درمیان کوئی حفاظتی بندوبست نہیں تھا ۔اس شیر کو حسن حسین نام کا آفریدی کا ایک پرستار ان کے گھر لے کر آیا تھا۔

یہ شیر دوسال کا ہے اور حسن نے ہی اس کی پرورش کی ہے کیونکہ اس کی ماں اس کی ولادت مے فوراًبعد مر گئی تھی۔حسن کے مطابق شیر مکمل طور پر پالتو ہے اور کسی کو نقصان نہیں پہنچاتا۔تاہم آفریدی کے گھر وہ زنجیروں میں جکڑ کر رکھا گیا تھا۔

سندھ وائلڈ لائف محکمہ کے عدنان خان نے کہا کہ چونکہ حسن کا یک چھوٹا سے چڑیا گھر ہے اور میر پور سکرو میں جانور پالنے فارم بھی ہے، اسے ان کاموں کے لیے لائسنس ملا ہوا ہے۔جرم ثابت ہونے پر سزا کے بارے میں معلوم کیاگیا تو بہت زیادہ نرمی برتی گئی تو تنبیہہ اور جرمانہ کیا جا سکتا ہے۔کچھ زیادہ ہوا تو حسن کا سرٹی فیکیٹ منسوخ کیا جا سکتا ہے۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Sindh wildlife department orders inquiry into shahid afridis lion episode in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply