جج نے زرداری سے پوچھا کیا قومی احتساب بیورو ہیڈ کوارٹر کو اسپتال میں تبدیل کر دیا جائے؟

اسلام آباد: ایک احتساب عدالت کے جج محمد ارشد ملک نے جعلی بینک کھاتے کیس کی سماعت کے دوران حیرت ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ وہ بدعنوانی کے تمام مشتبہ افراد کے،جو تیزی سے بیمار ہو رہے ہیں، علاج کے لیے قومی احتساب بیورو کے ہیڈ کوارٹر کو شفاخانے میں تبدیل کر دے۔

جج ارشد ملک نے اسلام آباد کی احتساب عدالت میں پیش کیے جانے والے سابق صدر مملکت آصف علی زرداری سے ہلکے پھلکے الفاظ کے تبادلہ کے دوران یہ بات کہی۔

اس مقدمہ میں ایک دیگر مشتبہ ،اومنی گروپ کے سی ای او عبد الغنی مجید کی داخل کر دہ درخواست کی ، جس میں انہوں نے بیورو کی تحویل کے دوران طبی سہولتیں بہم پہنچانے کی استدعا کی تھی،سماعت کرتے ہوئے جج ارشد ملک نے حیرانی ظاہر کی اور کہا” کیا ہمیں قومی احتساب بیورو کے ہیڈ کوارٹر کو کسی اسپتال میں منتقل نہیں کردینا چاہئے؟“

انہوں نے کہا کہ اگر کوئی شکس اندر سے دروازہ بند کر کے دو روز تک ایک کمرے میں بیٹھا رہے تو وہ بیمار نہیں پڑتے۔

لیکن جب انہیں یہ پتہ چلے کہ کسی نے باہر سے دروازے میں تالاڈال دیا ہے تو وہ بے چین ہو جاتے ہیں۔ انہیں نے کہا کہ کچھ ایسی ہی نوعیت جعلی کھاتوں کیس کی ہے ۔جس میں گرفتار کیے جانے والا ہر شخص بیمار ہو جاتا ہے۔

اس موقع پر زرداری نے جو وہاں موجود تھے،برجستہ کہا۔صاحب ہم اتنے کمزور نہیں ہیں۔وہ صحتمند و تندرست ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ وی جیل جانے سے اس لیے خوفزدہ نہیں ہیں کیونکہ انہوں نے 13سال تک قید تنہائی بھگتی ہے۔

جس پر جج نے مزاحاً کہا کہ ہر شخص آپ جیسا مرد آہن نہیں ہو سکتا۔کچھ لوگ شیر سے بھی بھڑ جاتے ہیں اور کچھ میمنے سے بھی ڈر جاتے ہیں۔

جس پر زرداری اپنے سیاسی حریف وزیر اعظم عمران خان پر طنز کسنے سے خود کو روک نہ سکے اور فوراً کہا کہ ہمارے وزیر اعظم تو چھپکلی تک سے ڈر جاتے ہیں۔جس پر جج نے کہا”کوئی تبصرہ نہیں“۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Should nab headquarters be shifted to a hospital asks judge in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.