عمران خان کی ہندوستان کو مذاکرات کی پیش کش پر حزب اختلاف کااظہار ناخوشی

اسلام آباد: پاکستان کی قومی اسمبلی میں حزب اختلاف کے سنیٹروں نے پاکستان تحریک انصاف قیادت والی مخلوط حکومت کو سخت ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ ایسے وقت میں جب کشمیر میں ہندوستانی فوجوں کی بربریت عروج پر ہے وزیر اعظم عمران خان کا ہندوستان کو مذاکرات کی پیش کش کرنے کی کیا ضرورت تھی۔

ایوان میں یہ معاملہ اٹھاتے ہوئے سینیٹ کے سابق چیرمین و پاکستان پیپلز پارٹی لیڈر میاں رضا ربانی نے کہا کہ ایسے موقع پر جب ہندوستانی فوج ان کشمیریوں پر جو اپنے نیک مقصد کے لیے جدوجہد کر رہے ہیں،ظلم کے پہاڑ توڑ رہی ہے اور کشمیر میں صورت حال ابتر ہے وزیر اعظم کا ہندوستان کو مذاکرات کی پیش کش کرنا ناقابل فہم ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہندوستانی وزیر اعظم نریندر مودی کا مسٹر خان کے نام مکتوب رسم دنیا نبھانے کا تھالیکن ہمارے وزیر اعظم نے اس کے جواب میں مذاکرات کی ہی پیش کش کرڈالی۔

انہوں نے مذکورہ مکتوب میں استعمال کی گئی زبان پربھی اعتراض کیاجس میں کہا گیا کہ ”ہم دہشت گردی پر بات کرنے تیار ہیں“۔انہوں نے کہا کہ دہشت گردی پر ہندوستانی موقف سے سبھی واقف ہیں۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Questions raised in senate over imrans talks offer to india in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News
What do you think? Write Your Comment