قندیل بلوچ کو ان کے آبائی گاؤں میں سپرد خاک کر دیا گیا

ملتان: ماڈل اور سوشل میڈیا کی زینت بنی رہنے والی قندیل بلوچ کی، جنہیں ان کے چھوٹے بھائی نے کاروکاری میں قتل کر دیا تھا، نماز جنازہ ڈیرہ غازی خان ضلع میں ان کے آبائی گاؤں شاہ صدر الدین میں ادا کی گئی اور ہھر ایک مقامی قرستان میں ان کی تدفین عمل میں آئی۔
دریں اثنا ملتان کے ایک مجسڑریٹ نے ان کے بھائی وسیم کو، جس نے اقبال جرم کر لیا ہے، تین روز کے لیے پولس تحویل میں دے دیا۔قندیل کی میت ان کے گاؤں لے جائی گئی جہاں کثیر تعداد نے ان کے جنازے میں شرکت کی۔ تدفین سے پہلے قندیل کی خاتون رشتہ داروں نے مقامی روایت کے مطابق ان کے ہاتھوں پیروں پر مہندی لگائی ۔
ان کی ماں بار بار ان کے ہاتھ چوم رہیتھیں۔اس موقع پر ان کے دوبھائی اور شادی شدہ دو بہنیں بھی موجود تھیں۔میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے قندیل کے والد محمد عظیم نے کہا کہ وہ وسیم کے خلاف مقدمہ کریں گے ۔”یہ میری بیٹی نہیں بیٹا تھی،آج میں اپنے بیٹے سے محروم ہو گیا ہوں۔یہ ہم سب کی اور اس بھائی کی بھی جس نے اس ے قتل کیا ہے،کفالت کرتی تھی۔
انہوں نے کہا اس کی اکمیابیوں سے اس کے بھائی خوش نہیں تھے اور باجود اسکے کہ وہ ان بھائیوں کی مدد کرتی تھی وہ اس کے خلاف ہی رہا کرتے تھے۔گاؤں والوں نے اس کے قتل کی مذمت کی اور اسے بے رحمانہ عمل سے تعبیر کیا۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Qandeel laid to rest in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply