وزیر دفاع خواجہ آصف کا بھی دوبئی کا اقامہ بے نقاب

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف کے لیڈر عثمان ڈار نے وزیر دفاع خواجہ آصف کی اقامہ دستاویزات حاصل کرنے کا دعویٰ کیا ہے جس سے ثابت ہوتا ہے کہ خواجہ آصف بھی دبئی میں کمپنی کے ملازم تھے۔ اقامہ دستاویزات کی دستیابی کے بعد عثمان ڈار نے خواجہ آصف کی نا اہلی کے لیے قانونی چارہ جوئی پر مشاورت شروع کر دی۔ اقامے کے مطابق خواجہ آصف دبئی کی ایک کمپنی میں ملازم ہیں ۔عثمان ڈار نے دعویٰ کیا کہ خواجہ آصف نے 2013میں الیکشن کمیشنمیں داخل کردہ حلف نامہ میں اپنے اثاثہ جات کے حوالے سے بیان میں اقامہ سے ہونے والی آمدن ظاہر نہیں کی۔
دوسری جانب وزیر دفاع خواجہ آصف نے تحریک انصاف کی جانب سے یو اے ای کی کمپنی میں ملازمت اور اقامہ سے متعلق الزامات کو بے بنیاد قرار دے دیا ہے جب کہ 2013 کے انتخابات کے کاغذات نامزدگی بھی مل گئے ہیں جس میں انہوں نے اپنا اقامہ ظاہر کیا ہوا تھا۔ 2013 میں جمع کرائے گئے کاغذات نامزدگی کے مطابق خواجہ آصف نے متحدہ عرب امارات میں 6 ماہ قیام کا اقامہ حاصل کیا، خواجہ آصف نے 3 مختلف ادوار میں تین اقامے حاصل کیے، ایک اقامہ 2007 سے 2010، دوسرا اقامہ 2010 سے 2011 تک جب کہ تیسرا اقامہ 2010سے 2011 تک کا تھا۔اس حوالے سے خواجہ آصف کا کہنا ہے کہ ان کا اقامہ 27 سال سے الیکشن کمیشن اور ایف بی آر میں ظاہر کیا ہوا ہے، ان کا ابو ظہبی میں 1983 سے بینک اکاو¿نٹ موجود ہے ، اسی وقت سے بینکنگ چینلز کے ذریعے پیسے وصول کرتے ہیں۔
عثمان ڈار نے الزام عائد کیا ہے کہ وزیر دفاع خواجہ آصف کو اقامہ 25 مئی 2011 کو جاری ہوا جس کی مدت 23 مئی 2012 کو ختم ہوئی۔ذرائع کے مطابق سیالکوٹ سے خواجہ آصف کے حلقے سے تحریک انصاف کے امید وار عثمان ڈار نے مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر خواجہ آصف کے اقامے کی کاپی جاری کردی جس کے مطابق وفاقی وزیر دفاع دبئی کی ایک کمپنی میں ملازم ہیں۔اس تصویر کے ساتھ عثمان ڈار نے پیغام میں دیا کہ ”سیالکوٹ کا درباری خواجہ بھی اقامے والا نکلا ،ہور اقامے لوو“۔ انہوں نے الزام عائد کیا ہے کہ اس ملازمت کے بدلے میں خواجہ آصف مختلف منصوبوں میں اپنی کمپنی کو مالی فائدے پہنچاتے ہیں۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Ptis usman dar claims to acquire kh asifs iqama documents in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply