قندیل بلوچ قتل کیس میں مفتی عبد القوی سے بھی پوچھ گچھ کی جاسکتی ہے

ملتان : اس بات کا علم ہوا ہے کہ ماڈل اور سوشل میڈیا کی زینت بنی قندیل بلوچ کے قتل کی تحقیقات کرنے والے مقتولہ کے بڑے بھائی اسلم شاہین، جو فی الحال فوج میں بر سر ملازمت ہے، کے ساتھ ساتھ مفتی عبد القوی سے بھی پوچھ گچھ کر سکتی ہے کیونکہ سوشل میڈیا پر قندیل کے ساتھ ان کی سیلفی کے ویڈیو فوٹیج ہی تنازعہ کا باعث بنے تھے۔
واضح رہے کہ اس سیلفی نے ایسا طوفان برپا کیا تھا کہ مفتی عب القوی کو رویت ہلال کمیٹی اور قومی علماءو مشائخ کونسل سے معطل کر دیا گیا تھا۔اسی واردات کے حوالے سے پولس نے قندیل کے چھوٹے بھائی وسیم کو جوڈیشیل مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کیا جہاں سے اسے ضابطہ فوجداری کی دفعہ 164کے تحت اقبالیہ بیان قلمبند کر نے کے بعد عدالتی تحویل میں دی دیا۔
ریجنل پولس افسر سلطان اعظم تیموری نے ڈان نیوز کو بتایا کہ پولس وسیم کے اقبالی بیان کے حوالے پر پورا بھروسہ کرکے نہیں بیٹھی بلکہ وہ اس قتل کے دیگر پہلوو¿ں کو بھی تلاش کر رہی ہے۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Police may investigate mufti qavi in qandeel murder case in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply