وزیر اعظم نواز شریف کو اسلامی سربراہ اجلاس میں تقریر کا موقع نہیں دیا گیا

اسلام آباد: پہلے عرب۔اسلامی ۔امریکی سربراہ اجلاس میں شرکت کے لیے ریاض جانے والے وزیر اعظم نواز شریف کو جتنے خلوص سے مدعو کیا گیا تھا اس سے کہیں زیادہ دوران کانفرنس ان سے ذلت آمیز سلوک کیا گیا ذرائع کے مطابق امریکہ عرب اسلامی سربراہ کانفرنس میں وزیر اعظم نواز شریف اور ان کے ہمراہ وفد کو سرکاری سطح پر مناسب پروٹوکول نہیں دیا گیا، حتیٰ کہ کانفرنس میں تقریر کا موقعہ بھی نہیں دیا گیا۔ جبکہ اس اجلاس میں تقریر کرنے کے لیے میاں محمد نواز شریف نے کئی گھنٹے تیاریاں کی تھیں۔
ریاض میں موجود میڈیا کے نمائندوں کا کہنا تھا کہ پاکستان جوکہ ایک ایٹمی طاقت ہے اور دہشت گردی کے خلاف لڑی جانے والی جنگ میں ہر اول دستہ کی حیثیت رکھتا ہے، اس کے وزیر اعظم کو ضرور تقریر کا موقعہ دیا جانا چاہیے تھا۔ میڈیا ذرائع کے مطابق وزیر اعظم نواز شریف کے ساتھ انتہا درجہ ذلت آمیز رویہ اختیار کیا گیا ۔
عالمی ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کی جانب سے اس بات کو اہم قرار دیا جا رہا ہے کہ کانفرنس میں ان منظور نظر اور پسندیدہ رہنماؤں کو تقریر کا موقعہ دیا جاتا رہا ہے، جنہوں نے دہشت گردی کا سامنا تک نہیں کیا۔ دوسری جانب پاکستان کے وزیر اعظم کو کانفرنس میں دعوت دینے کے لیے خود سعودی وزیر خارجہ پاکستان آئے تھے، اس کے باوجود پاکستان کے وزیر اعظم اور ان کے ہمراہ وفد کے ساتھ غیر مناسب رویہ رکھا گیا۔اور ان سے غیروں جیسا سلوک کیا گیا ۔
حیرت کی بات یہ ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے القاعدہ اور داعش کے خلاف جنگ لڑے اور قربانیاں دینے والے مسلم ملک پاکستان کو تو نظر انداز کردیا لیکن مبینہ طور پرکشمیری مسلمانوں پر ظلم ڈھانے والے ملک ہندوستان کو دہشت گردی کا شکار ملک قرار دیا۔ صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اسرائیلی مظالم کو بھی یکسر نظر انداز کر دیا۔ اس موقع پر شاہ سلمان کا نرم رویہ تکلیف دہ رہا۔

Title: pm nawaz given no chance to address islamic summit despite hours long preparations | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply