آف شور کمپنیوں میں غیر اعلانیہ اثاثوں کا باضابطہ کرناشریف حکومت کی زیر غور

اسلام آباد: بیرون ملک واقع کمپنیوں میں پاکستانی حکام بالا ، ان کے رشتہ داروں و دیگر لواحقین و اہم شخصیات کے حصص اور سرمایہ کاری کاپنامہ دستاویزات سے جو انکشاف ہوا ہے اس نے حکومت اور حکومت میں شامل شخصیات کی راتوں کی نیند اور دن کا چین غارت کر دیا۔
اس وحشت سے چھٹکارا پانے کے لیے ٹیکس حکام کے حوالے سے معلوم ہوا ہے کہ نواز شریف حکومت آف شور کمپنیوں میں غیر قانونی اثاثوں کو باضابطہ کرنے کے لیے اقدامات کرنے پر غور کر رہی ہے۔ان اقدامات کو ، جن کا اعلان اگست میں کیا جائے گا،فیڈرل بورڈ آف ریوینیو، سیکورٹی اینڈ ایکسچنج کمیشن آف پاکستان اور اسٹیٹ بینک آف پاکستان حتمی شکل دے کر عمل آوری کریں گے۔
ایک ٹیکس اہلکار نے بتایا کہ محکمہ ٹیکس سے بھاری ٹیکس دہندگان کے آف شور کمپنیوں میں غیر اعلانیہ اثاثوں کو ریگولرائز کرنے کا منصوبہ بنانے کہا گیا تھا۔ ٹیکس اصلاحات کمیشن پنامہ دستاویزات افشا کی خبریں عام ہونے سے بہت پہلے سے اس منصوبہ پر کام ہو رہا تھا۔
ٹیکس اہلکارنے مزید کہا کہ مجوزہ اسکیم میں غیر ملکی اثاثے کا اعلان کرنے اور غیر ملکی زرمبادلہ کے کنٹرول کے دو قوانین متعارف کرائے جائیں گے۔ایک قانون کے تحت ان لوگوں کو قانونی تحفظ حاصل رہے گا جنہوں نے اپنے غیر ملکی اثاثہ جات اور آمدنی کا اعلان نہیں کیا ہے۔
انہوںنے یہ بھی کہا کہ مجوزی اسکیم کو حتمی شکل دینے سے پہلے حزب اختلاف کو اعتماد میں لیا جائے گا۔فی الحال ایسا کوئی قانون نہیں ہے جو کسی فرد کو اپنے غیر ملکی اثاثوں کی تفصیل بتانے کا پابند بناتا ہے۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: plan to regularise undeclared assets in offshore firms in Urdu | In Category: پاکستان  ( pakistan ) Urdu News

Leave a Reply