پنچایت نے9سالہ بچی کو ونی کی سزا سنا کر مقدمہ قتل کا نپٹارہ کر دیا

رحیم یار خان : ایک پنچایت نے قتل کے ایک مقدمہ کا فیصلہ کرتے ہوئے ایک 9سالہ بچی کو ونی کی سزا سنادی۔ پولس کے مطابق لیاقت آباد تحصیل کے گلشن فرید تھانہ کے علاقہ چک178/7آر کے رہائشی گامو رام نے 21فروری کو اپنی بیوی بختو مائی پر بد چلنی کا الزام لگا کر اسے قتل کر دیا تھا۔
جسے پولس نے گرفتار کر لیا۔ بعد میں اس معاملہ پر پنچایت بیٹھی اور اس نے فیصلہ سنایا کہ گامو رام کی9سالہ بیٹی کی شادی بختو مائی کے چچا پنو رام کے بیٹے 14سالہ ہری چند کے ساتھ ونی کے طور پر کی جائے۔گامو کو بختو مائی کے لواحقین کو ڈیڑھ لاکھ روپے ہرجانہ دینے کا بھی حکم دیا گیا۔ ایس ایچ او چودھری یٰسین نے کہا کہ وہ ابھی معاملہ کی تحقیقات کر رہے ہیں اور اس کے بارے میں ابھی کچھ نہیں کہہ سکتے۔
واضح رہے کہ پاکستان کے کچھ حصوں میں ونی ایک پرانی رسم ہے جس میںجرگہ ان کے مردوں کے کردہ جرائم کی سزا کے طور پر زبردستی کسی سے شادی کرانے کا حکم جاری کر دیتاہے۔مجموعی اعتبار سے اسے باقاعدہ شادی اطفال کہا جاسکتا ہے۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Panchayat gives girl 9 as vani today to settle murder case in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply