پاکستان نے ہندوستانی ہائی کمشنر کو گوردوارہ جانے سے روکنے کے ہندوستان کا الزام خارج کردیا

اسلام آباد: ابھی پاکستانی فوجی سربراہ جنرل قمر جاوید باجوا کو ہندوستان اور پاکستان کے درمیان کشمیر سمیت تمام تنازعات طے کرنے کے لیے جامع اور با معنی مذاکرات کا مشورہ دیے ایک روز بھی نہیں گذرا تھا کہ دونوں ملکوں نے زائرین کے سفر کے حوالے سے 44سالہ پرانے آداب کی پامالی کا ایک دوسرے پر الزام عائد کرنا شروع کر دیا۔
خارجہ دفتر کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے ایک بیان میں کہا کہ بڑی ستم ظریفی ہے کہ حکومت ہند پاکستان پر مذہبی عبادت گاہوں اور زیارت گاہوں کا سفر کرنے والوں کے حوالے سے 1974کے پروٹوکول کی خلاف ورزی کا الزام لگا رہا ہے جبکہ یہ حکومت ہند ہے جو حضرت نظام الدین اولیاؒءاور خواجہ معین الدین چشتی ؒکے عرس کے موقع پر ایک سا ل کے اندر دو بار جون2017سے کم از کم تین بار سکھ اور ہندو زائرین کو پاکستان میں مذہبی عبادت گاہوں کی زیارت کے لیے آنے سے روک کر پروٹوکول کی خلاف ورزی کر چکی ہے۔
فیصل نے یہ بات ہندوستانی وزارت خارجہ سے جاری اس بیان کے جواب میں کہی جس مین کہا گیا تھا کہ ہندوستانی ہائی کمشنر متعین پاکستان کو گوردوارہ پنجہ صاحب میں سکھ زائرین سے ملاقات کرنے کی اجازت نہیں دی گئی۔

Title: pakistan rejects indian charge about envoys visit to gurdwara in Urdu | In Category: پاکستان  ( pakistan ) Urdu News

Leave a Reply