پاکستان نے دہشت گردتنظیموں پر برکس اعلامیہ مسترد کر دیا ، ملک میں دہشت گردوں کی کوئی پناہ گاہ نہیں:وزیر دفاع

اسلام آباد: لشکر طیبہ اور جیش محمد جیسی دہشت گرد تنظیموں و گروپوں کے خلاف کارروائی کرنے کے بڑھتے عالمی دباو¿ کے درمیان پاکستان نے یہ کہتے ہوئے کہ اس کی سرزمین پو دہشت گردوں کی کوئی محمفوظ کمین گاہ نہیں ہے، چین سمیت تمام برکس ممالک کے مشترکہ اعلامیہ کو مستر کر دیا۔میڈیا ذرائع کے مطابق وزیر دفاع خرم دستگیر نے برکس اعلامیہ کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ برکس اعلامیہ حقیقت پر مبنی نہیں اور ہم اس کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔ انہوں نے برکس اعلامیہ پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان خود دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑ رہا ہے لہٰذا پاکستان میں دہشت گردوں کے لیے کوئی محفوظ پناہ گاہ نہیں ہے۔ وزیر دفاع نے مزید کہا کہہم بیجنگ میں منعقدہ برکس کانفرنس کے اعلامیہ کو مسترد کرتے ہیں۔قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی میں بات کرتے ہوئے وزیر دفاع نے کہا کہ ساری دنیا جانتی ہے کہ دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہیں پاکستان میں نہیں بلکہ افغانستان میں ہیں۔ انہوں بتایا کہ افغانستان کی صورتحال یہ ہے کہ 407 اضلاع میں سے صرف 60 اضلاع پر افغان حکومت کا کنٹرول ہے جبکہ باقی 347 اضلاع پر طالبان کی حکومت ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان نے دہشت گردوں کے خلاف جتنی کامیاب کارروائیاں کی ہیں، اتنی کارروائیاں تو امریکہ عراق اور افغانستان میں بھی نہیں کرسکا۔ انہوں نے واضح کیا کہ پاکستان کا دفاع مضبوط ہاتھوں میں ہے۔واضح رہے کہ 43صفحاتی برکس اعلامیہ میں طالبان، دولت اسلامیہ فی العراق و الشام (داعش) ، القاعدہ اور اس سے وابستہ گروپ بشمول مشرقی ترکستان تحریک اسلامی،تحریک اسلامی ازبکستان، حقانی نیٹ ورک، لشکر طیبہ، جیش محمد ، تحریک طالبان پاکستان اور حزب التحریر کی دہشت گردانہ کارروائیوں کے باعث خطہ میں سلامتی کے حالات پر سخت تشویش ظاہر کی گئی تھی۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Pakistan rejects brics statement on terrorist groups in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply