افغان سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال کیے جانے کے ٹھوس ثبوت:پاکستانی فوجی افسر

اسلام آباد:پاکستان بارہا افغانستان سے شکایت کر چکا ہے کہ دہشت گرد افغان سرزمین کو پاکستانی علاقہ میں دہشت گردانہ حملے کرنے کے لیے استعمال کر رہے ہیں۔ اور پاکستان کئی مرتبہ افغانستان کو انتباہ دے چکا ہے کہ وہ اپنی سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال ہونے سے روکے لیکن افغانستان کہتا تھا کہ اس ضمن میں پاکستان کے پاس اگر کوئی ثبوت ہے تو پیشکرے۔
اب پاکستانی فوج نے افغانستان کی زمین پاکستان کے خلاف استعمال ہونے کے اہم ثبوتوں تک رسائی حاصل کر لی ہے۔اس بات کا انکشاف لفٹیننٹ کرنل ہارون نے شمالی وزیرستان میں پشاور کے صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے کیا۔ انہوں نے بتایا کہ افغانستان میں داعش اور طالبان دہشت گردوں کو عسکری تربیت دے کر پاکستان بھجواتے ہیں تاکہ پاکستان کو ناامن کیا جا سکے۔انہوں نے بتایا کہ ہم نے سیٹلائٹ کے ذریعے ان مقامات کی تصاویر حاصل کر لی ہیں، ان تصاویر میں تحریک طالبان، داعش اور خالد سجنا گروپ کو دہشت گردوں کی تربیت کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔لیفٹیننٹ کرنل ہارون نے مزید بتایا کہ دہشت گرد افغان سرزمین کو پاکستان کے خلاف بغیر کسی خوف و خطر کے استعمال کر رہے ہیں اور طالبان کمانڈر عبدالولی ننگر ہار میں بیٹھ کر دہشت گردوں کو منظم کرتا ہے اور دہشت گردانہ کارروائیوں میں استعمال کرتا ہے۔
بارڈر مینجمنٹ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ہم نے اپنی طرف سے 205 فوجی چیک پوسٹیں قائم کر رکھیں ہیں لیکن افغانستان نے صرف 133 چیک پوسٹیں بنائی ہوئی ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ پاک فوج قبائلی علاقوں میں تعلیمی اور صحت کی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہے اور عالمی اداروں سے بھی اس کام کی امید رکھتے ہیں۔ کرنل ہارون کا کنا ہے کہ دہشت گردی کی ایک بڑی وجہ ہمسایہ ملک افغانستان میں دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہیں ہونا ہیں۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Pak army have proof of afghan soil being used against pakistan in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply