وزیر اعظم کہاں ہیں کے نعرے لگاتے ہوئے حزب اختلاف سینیٹ و قومی اسمبلی سے واک آؤٹ کر گئی

اسلام آباد: پارلیمنٹ ہاؤس ایک بار پھر ”وزیر اعظم کہاں ہیں؟ کے نعروں سے گونج اٹھا اور حزب اختلاف یہ کہتے ہوئے سینیٹ اور قومی اسمبلی سے واک آو¿ٹ کر گئی کہ وہ اس وقت تک دونوں ایوانوں کا بائیکاٹ جاری رکھے گی جب تک کہ وزیر اعظم بنفس نفیس ایوان نہیں آجاتے۔اور آف شور کمپنیوں کی ملکیت کے حوالے سے اپنے کنبہ والوں کی صفائی پیش نہیں کردیتے۔
بائیکاٹ کا اعلان قومی اسمبلی میں سید خورشید شاہ نے اور سینیٹ میں چودھری اعتزاز احسان نے کیا۔نکتہ ضابطہ اٹھاتے ہوئے مسٹر احسان نے کابینی وزیروں سے جن میں بیشتر اس وقت ایوان میں موجود تھے، کہا کہ وہ وزیر اعظم کو ایک پیغام بھیجیں کہ وہ پنامہ لیکس کی روشنی میں منظر عام پر آنے والے الزامات پر اپنے موقف کی وضاحت کرنے کے لیے پارلیمنٹ پہنچیں۔
قومی اسمبلی میں مسٹر شاہ نے ان دنوںکی یاد کی جب پاکستان تحرئیک انصاف نے پارلیمنٹ کے باہر خیمہ گاڑا تھا اور اس وقت یہی حکومت تھی جس نے کہا تھا کہ تمام اہم معاملات ایوان میں زیر بحث آنے چاہئیں۔اور اب جب ہر شخص بشمول پی ٹی آئی ہنامہ لیکس معاملہ اٹھانے پر بضد ہے تو وزیر اعظم منظر سے غائب ہیں۔

Title: opposition to boycott both houses until pm returns to parliament | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply