ملک میں عدالتی مارشل لا کے نفاذ کی افواہیں بے بنیاد:چیف جسٹس نثار

اسلام آباد: چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ملک میں عدالتی مارشل لا کے نفاذ کے امکان کی افواہوں کو خارج کر دیا اور کہا کہ اس کے لیے آئین میں کوئی گنجائش یا ضابطہ نہیں ہے۔
انہوں نے صراحت کے ساتھ بیان کیا کہ جب تک وہ ملک کے چیف جسٹس ہیںملک میں مطلق العنان حکومت نہیں بنے گی۔ یوم پاکستان کے موقع پر لاہور کیتھڈر ل چرچ میں تقریر کرتے ہوئے چیف جسٹس نے کہا کہ جوڈیشیل مارشل لا جیسی جن چیزوںکی باتیںکی جارہی ہیںان کی پاکستانی آئین اجازت ہی نہیں دیتا۔
چیف جسٹس نے کہا کہانہوں نے آئین کی حفاظت کرنے کا حلف اٹھایا تھا۔انہوںنے کہا کہ آئین سے روگردانی کسی طور بھی برداشت نہیں کی جائے گی۔انہوں نے دو ٹوک لہجہ میں کہا کہ وہ ہر گز بھی جمہوریت کے پٹری سے نہیں اترنے دیں گے۔انہوں نے کہاکہ انہیں امید ہے کہ آئندہ ہونے والے انتخابات آزادانہ ہوں گے اور اگلی حکومت آئین کی روشنی میں تشکیل دی جائے گی۔

Title: no place for judicial martial law in constitution says cjp | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply