نواز شریف اقتدار پاتے ہی وعدے بھول جاتے ہیں، اب ان سے معانقہ تو دور کی بات مصافحہ بھی نہیں کریں گے:زرداری

لاہور: سیاست میں کون کب اپنی آنکھیں بدل لے اور کب سیاسی دوستی دشمنی میں اور اتحاد کی دیوار ریت کے ڈھیر میں تبدیل ہوجائے کچھ نہیں کہا جا سکتا ۔یہی وجہ ہے کہ سپریم کورٹ نے جیسے ہی سابق وزیراعظم میاں محمد نوازشریف کو نااہل قرار دیا سیاسی رہنما ؤں اور قائدین نے ان سے دوری اختیار کرنا شروع کردی ۔ اور جو کل تک ان کا دم بھرتے تھے آج ان کے قریب سے گذرنے میں بھی خوف محسوس کر رہے ہیں۔کیونکہ اس وقت میاں جی جن حالات سے گذر رہے ہیں اس کے پیش نظر دوست نما سیاسی قائدین کو میاں صاحب سے دوری میں ہی عافیت نظر آنے لگی ہے۔
پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چئیرمین اور سابق صدر آصف علی زرداری نے بھی میاں صاحب سے ہاتھ ملانے سے صاف انکار کرتے ہوئے کہا ہے کہ میرا نوازشریف کے ساتھ نہ پہلے کوئی رابطہ تھا اور نہ اب میں ان سے کوئی رابطہ رکھنا چاہتا ہوں۔آصف زرداری نے نوازشریف پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ جب نوازشریف اقتدار میں ہوتے ہیں تو انہیں کچھ نظر نہیں آتا اور نہ ہی کوئی معاہدہ ان کو یاد رہتا ہے لیکن جیسے ہی اقتدار سے نا اہل ہوئے انہیں اب گرینڈ ڈائیلاگ الائنس، آرٹیکل62,63میں ترمیم سمیت تمام وہ چیزیں یاد آنا شروع ہو جاتی ہیں جن سے وہ خود کو بچا سکتے ہوں ۔ انہوں نے کہا ہے کہ اس وقت ملک میں جمہوریت کو کوئی خطرہ نہیں بلکہ نوازشریف کی ذاتی سیاست کو خطرہ ہے۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: No more handshakes with nawaz zardari in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply