جج حضرات کے جملوں میں ہمارے تئیں غصہ اور بغض صاف جھلک رہا تھا: نواز شریف

اسلام آباد: نااہل قرار دیے گئے سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے اسلام آباد کی احتسابی عدالت سے، جس نے انہیں ان کے خلاف بدعنوانی کے تین معاملات میں بدھ کے روز مجرم قرار دیا،باہر نکلتے ہوئے میڈیا سے بات کرنے کے دوران کہاکہ جج صاحبان کے جملوں اور باتوں میں نہایت غصہ اور بغض جھلک رہا تھا۔
نواز شریف اور ان کی اولاد کے خلاف کرپشن معاملات کی سماعت کرنے والی احتساب عدالت نے تینوں ریفرنسز کو یکجا کر کے ایک کیس بنانے کی سابق وزیر اعظم کی استدعا مسترد کردی۔
اپنی نا اہلی کے خلاف دائر درخواست پر منگل کو سنائے جانے والے تفصیلی فیصلے کے حوالے سے بات کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ ججز حضرات کا بغض اور غصہ ان کے الفاظ میں ڈھل کرسامنے آ گیا ۔
ان کا کہنا تھا مجھے امید ہے کہ ججز کا یہ فیصلہ اور الفاظ ملک کی تاریخ میں سیاہ باب کے طور پر پڑھے جائیں گے ۔انہوں نے مزید کہا کہ وہ پہلے ہی اس بات سے واقف تھے کہ آج (بدھ) جو فیصلہ سنایا جائے گا وہ دور دور تک ان کے حق میں نہیں ہوگا۔
نواز شریف نے کہا کہ ملک میں 70 سال سے یہی ہوتا چلا آ رہا ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ جب بھی ڈکٹیٹر آئے ہیں ہماری عدلیہ نے کئی سیاہ اوراق لکھے ہیں۔
احتساب عدالت میں ججز کے فیصلے کے بعد نواز شریف کا کہنا تھا کہ ہم پر عائد کردہ تمام الزامات بے بنیاد اورقوامی احتساب بیورو کے ریفرنسز بد دیانتی پر مبنی ہیں،انہوں نے کہا کہ ہمیں منصفانہ مقدمہ کے حق سے محروم رکھا گیا ۔

Title: nawaz sharif says grudge anger of judges out in open | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply