اپنے دور میں قومی احتساب بیورو کے ظالمانہ قانون کی تنسیخ نہ کرنے پر وزیر اعظم نواز شریف کو ملال

اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ نواز(پی ایم ایل این) کے رہنمائے اعظم میاں محمد نواز شریف نے ، جو کہ سپریم کورٹ آف پاکستان کے حکم پر قومی احتساب بیورو کی جانب سے دائر بدعنوانی کے تین ریفرینس کا سامنا کر رہے ہیں،کہ وہ آج پچھتا رہے ہیںکہ وہ اپنے دور اقتدار میں ’استبدانہ قومی احتساب بیورو قوانین“ کی تنسیخ کے لیے اقدامات نہیں کر سکے۔آج مجھے احساس ہو رہا ہے اور تجزیہ سے ثابت بھی ہوگیا ہے کہ قومی احتساب بیورو قوانین کی روح سخت ظالمانہ ہے۔وہ تمام قوانین جو تانا شاہوں نے بنائے تھے منسوخ کر دیے جانے چاہئیں۔ سابق وزیر اعظم نے کہا کہ مقدمہ میں ماخوذ غریب لوگوں کو انصاف نہیں مل رہا کیونکہ ان کے پاس دسیوں سال چلنے والی قانونی جنگ لڑنے کے لیے پیسہ نہیں ہے۔ اور کبھی کبھی تو مقدمہ لڑتے رہنے کے لیے وہ اپنی املاک تک فروخت کر دیتے ہیں۔ دودھ ، اسپتالوں اور دواو¿ںکے معیار جاننے کے حوالے سے چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار کے ذریعہ از خود نوٹس لینے پر تنقیدکرتے ہوئے سابق وزیر اعظم نے کہا کہ اگر چیف جسٹس نے مقدمات میں الجھے معمولی افراد کو جلد از جلد انصاف دلانے کے لیے اقدامات کیے ہوتے اور اس کے لیے وقت لگایا ہوتا تو یہ زیادہ ثواب کا کام ہوتا۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Nawaz regrets failure to abolish draconian nab laws in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply