متحدہ مجلس عمل بحال، تمام سیاسی مذہبی جماعتیں ایک نشان ’کتاب‘ پر عام انتخابات لڑیں گی

کراچی: سیاسی مذہبی پارٹیوں نے متحدہ مجلس عمل کو فعال کرنے کے حتمی فیصلہ کا باقاعدہ اعلان کیا ہے۔کراچی میں ہونے والے اجلاس میں طے کیا گیا کہ آئندہ عام انتخابات میں متحدہ مجلس عمل ایک انتخابی نشان پرالیکشن لڑے گی۔
یوں تو مجلس کو بحال کرنے کا فیصلہ تو ایک ماہ پہلے ہی کیامجا چکا تھا لیکن آج مختلف سیاسی مذہبی پارٹیوں کے سربراہوں کا کراچی میں مولانا شاہ احمد نورانی مرحوم کی رہائش گاہ پر اجلاس ہوا۔ جس میں جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق ، جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمن ، جمعیت علمائے پاکستان کے قائد شاہ اویس نورانی ، اسلامی تحریک کے سربراہ علامہ ساجد نقوی اور جمعیت اہلحدیث کے مرکزی صدر پروفیسر ساجد میر کے علاوہ اسٹیرنگ کمیٹی کے ممبران مولانا امجد خان ، لیاقت بلوچ نے بھی شرکت کی۔
اجلاس کے بعد صحافیوں سے بات کرتے ہوئے شاہ اویس نورانی نے کہا کہ اسٹیرنگ کمیٹی کی سفارشات کے بعد متحدہ مجلس عمل کو فعال کرنے کا حتمی فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ آئندہ ایک مہینے کے اندر اس کا تنظیمی ڈھانچہ بنا لیا جائے گا اور مرکزی عہدیداران کا اعلان کر دیا جائے گا۔ اس کے بعد بھرپور انتخابی مہم شروع کی جائے گی۔
انہوں نے کہا کہ جو جماعتیں مختلف حکومتی اتحادوں میں شامل ہیں، ان کی علیحدگی کا باضابطہ فیصلہ بعد میں کیا جائے گا۔ اویس نورانی نے کہا کہ ملکی اور غیر ملکی مسائل پر ایم ایم اے قانونی اور عوامی جد و جہد جاری رکھے گی۔یہ معلوم ہوا ہے کہ اتحاد میں شامل تمام پارٹیاں آئندہ عام انتخابات ’کتاب‘ نشان کے تحت لڑیں گی۔

Title: muttahida majlis e amal announces nationwide campaign from 2018 | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply