لاہور کی عدالت نے غیرت کے نام پر بیٹی کو زندہ جلادینے والی ماں کوسزائے موت سنادی

لاہور: یہاں کی ایک انسداد دہشت گردی عدالت نے پسندکی شادی کرنے پر اپنی بیٹی کو زندہ جلا دینے والی ماں کو موت کی سزا سنا دی۔ پولس کے مطابق لاہور کے فیکٹری علاقہ کی رہائشی 18سالہ زینت رفیق کو، جس نے ایک ہفتہ قبل گھر سے بھاگ کر لاہور کی ایک عدالت میں حسن خان نام کے ایک شخص سے شادی کر لی تھی، اس کی ماں پروین بی بی نے زندہ جلا کر ہلاک کر دیاتھا۔
پروین نے اپنے گھر والوں کو شرمسار کرنے کے باعث زینت کو ہلاک کرنے کا اعتراف کر لیا تھا۔ پولس کو شبہ ہے کہ اس لڑکی کو جلانے میں پروین کے بیٹے اور داماد نے اس کی مدد کی تھی۔ معلوم ہوا ہے کہ زینت کی ماں اور بھائیوں اور بہنوئی نے پہلے اسے بری طرح زدو کوب کیا اور پھر اس کی ماں نے مٹی کا تیل اس کے اوپر انڈیل کر اسے آگ لگا دی۔
زینت کے شوہر حسن نے شادی کے ایک سال بعد اپنے سسرال والوں کی اس یقین دہانی کے بعد کہ وہ روایتی رسم و رواج سے دونوں کے اعزاز میں ایک تقریب کا اہتمام کریںگے زینت کو ماں کے گھر بھیج دیاتھا۔زینت نہیں جانا چاہتی تھی۔کیونکہ اسے جان کا خطرہ محسوس ہو رہا تھا۔لیکن اپنے بھائیوں او ر ماںکی اس یقین دہانی کے بعد کہ اس کا بال بیکا نہیں ہوگا وہ چلی گئی تھی۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Mother sentenced to death for honour killing of daughter zeenat bibi in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply