مودی کے یوم آزادی خطاب میں بلوچستان کا ذکر کشمیر سے بین الاقوامی عالمی برادری کی توجہ بٹانے کی کوشش: پاکستان

اسلام آباد: وزیر اعظم نریندر مودی کے یوم آزادی کی تقریر میں بلوچستان کا ذکر کئے جانے پر پاکستان نے اعتراض کرتے ہوئے آج کہا کہ بلوچستان کا موازنہ کشمیر سے نہیں کیا جا سکتا اور مسٹر مودی گزشتہ پانچ ہفتوں سے کشمیر میں جاری تشدد کی صورت حال سے عالمی برادری کی توجہ ہٹانے کی کوشش کر رہے ہیں۔
دی نیوز کی ایک رپورٹ کے مطابق پاکستان کے وزیر اعظم کے خارجہ امور کے مشیر سرتاج عزیز نے کہا ہے کہ مسٹر مودی نے پاکستان کے اٹوٹ حصہ بلوچستان کا ذکر کیا ہے جو کہ پاکستان کی اس بات کو ثابت کرتا ہے کہ ہندوستان اپنی انٹیلی جنس ایجنسی را کے ذریعے بلوچستان میں دہشت گردی کو بڑھا وا دےرہا ہے۔ انہوں نے دعوی کیا کہ حال ہی میں گرفتار کئے گئے را کے فعال نیول سروس آفیسر نے بھی یہ بات تسلیم کی ہے۔
مسٹر عزیز نے کہا کہ کشمیر میں ہزاروں غیر مسلح نوجوان روزانہ مظاہرہ کر رہیں ہیں۔ تشدد کے کئی واقعات میں 70 کشمیری مارے جا چکے ہیں جبکہ 6000 سے زائد زخمی ہوئے ہیں۔ ان واقعات کا دہشت گردی سے کوئی لینا دینا نہیں ہے، یہ آزادی کے لئے چلائی جانے والی مقامی مہم ہے، ایک ایسا حق جس کا وعدہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے کشمیریوں سے کیا تھا۔
مسٹر عزیز نے کہا کہ ہندوستان کو یہ بات سمجھنی چاہیے کہ کشمیر کا مسئلہ گولیوں سے نہیں بلکہ دونوں ممالک کے درمیان بات چیت کے ذریعے ہی حل کیا جا سکتا ہے۔ واضح رہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے بلوچستان اور پاکستان کے مقبوضہ کشمیر کا مسئلہ اٹھا کر آج پڑوسی ملک کو دہشت گردی سے باز آنے کی سخت انتباہ دیا اور گمراہ ہوکر تشدد کا راستہ اپنانے والے ملک کے نوجوانوں سے مرکزی دھارے میں واپس آنے کی اپیل کی۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Modi trying to divert global attention from tragedy in india held kashmir says aziz in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply