ملالہ یوسف زئی طالبان کے حملہ کے بعد پہلی بار پاکستان واپس آئی

اسلام آباد: طالبان کے حملہ میں شدید زخمی ہو کر موت کے منھ سے واپس آنے والی حقوق نسواں کی علمبردار ملالہ یوسف زئی حملہ کے 6سال بعد پہلی بار پاکستان واپس پہنچ گئی۔
ملالہ جمعرات کو علی الصباح کراچی کے بے نظیر بین الاقوامی ہوائی اڈے پر سخت حفاظتی بندوبست میں اتری ۔توقع ہے کہ سب سے کم عمر نوبل انعام یافتی ملالہ اسلام آباد میں وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی سے بھی ملاقات کریں گی۔ جہاں ان کی آمد کا علم ہوتے ہی ہائی الرٹ جاری کر دیا گیا تھا۔ ملالہ کی آمد کا پاکستانی ابلاغی ذرائع میں بہت زور شور سے تذکرہ کیا جا رہا ہے۔
اخبارات میں نمایاںاور جلی سرخیوں میں ان کی آمد سے مطلع کیاگیا۔ایک حلقہ اگر ملالہ کو ایک ہیرو کے طور پر دیکھ رہا ہے تو ایک حلقہ جو راسخ العقیدہ عوام پر مشتمل ہے کا کہنا ہے کہ اسےہمیشہ کے لیے خاموش کر دینا چاہیے۔
واضح رہے کہ 2012میں ،جس وقت ملالہ بمشکل 14سال کی رہی ہوگی ، پاکستانی طالبان نے پاکستان کے وادی سوات میں منگورا میں اس وقت اس پر قاتلانہ حملہ کر دیا تھا جب وہ اپنی ساتھی طالبہ کے اتھ اسکول بس میں سور ہونے والی تھی۔ ملالہ کی گردن اور چہرے پر کئی گولیاں پیوست ہوگئی تھیں ۔
اسے شدید زخمی حالت میں ہیلی کاپٹر کے ذریعہ ایک فوج ی اسپتال سے دوسرے فوجی اسپتال لےا جایا گیاجاہں ڈاکٹروں نے اسے طبی طور پر سکرات کے عالم میں بتایا اسلیے فوری طور پر ایک ایر ایمبولنس کا بندوبست کر کے اسے یو کے بھیجا گیا ۔جہاں برمنگھ کے کوئین ایلزبتھ ہاسپٹل میں اس کا بڑی تندہی سےعلاج کیا گیا اور ایک ہفتہ کے اندر وہ اپنے پیروں پر کھڑا ہونے لگی۔ اس کے بعد وہ تیزی سے روبصحت ہوئی لیکن پاکستان نہیں آئی۔ اور اب چھ سال بعد وہ پاکستان آئی ہے۔

Title: malala returns to pakistan for the first time since attack | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply