اسلامی نظریاتی کونسل مخلوط تعلیم اور اسپتالوں ، دفاتر اور تفریحی مقامات پر نامحرموں کے میل جول کے خلاف

اسلام آباد: اسلامی نظریاتی کونسل نے اپنے مجوزہ تحفظ خواتین بل پر غور و خوض شروع کر دیا جس کی رو سے شوہر اپنی بیوی پر بوقت ضرورت معمولی تشدد کر سکتا ہے ۔ اس بل میں اسکولوں، اسپتالوں اور دفاتر میں عورتوں مردوں کے خلط ملط ہونے پا پابندی لگائی گئی ہے۔
کونسل کے مجوزہ بل میں حقوق نسواں کا خصوصی ذکر بھی کیا گیا ہے جس میںکہا گیا ہے کہ خواتین کو وہ تمام حقوق حاصل ہوںگے جو شریعت نے دے رکھے ہیں ۔ بل میں تفریحی مامات اور دفاتر میں نامحرموں کے ساتھ گھومنے پھرنے اور میل جول رکھنے پربھی پابندی عائد کرنے کی بات کہی گئی ہے نیز فنون لطیفی کے نام پر رقص و نغمہ ،موسیقی اور سنگ تراشی و مجسمہ سازی کو غیر شرعی بتایا گیا ہے اور اس پر بھی پابندی لگائی گئی ہے۔
س سے قبل پنجاب اسمبلی نے تحفظ خواتین بل منظور کیا تھا جسے نظریاتی کونسل اور دیگر مذہبی تنظیموں نے اسے غیر شرعی قرار دے کر مسترد کر دیا تھا۔بل میں خاص بات عورتوں کو دو سال تک شیر خوار بچوں کو اپنا دودھ پلانے کی وکالت کی گئی اور اوپر کے دودھ (پاو¿ڈر دودھ) کی تشہیر پر پباندی لگانے کی سفارش کی جائے گی۔عورت کے زبردستی تبدیلی مذہب پر پابندی لگائی جائے گی اور کوئی بھی عاقل و بالغ لڑکی ولی کی اجازت کے بغیر نکاح کرنے کے لیے آزادہو گی۔
غیرت کے نام پر عورت کے قتل کو قتل کا جرم قرار دیا جائے۔ونی یا مصالحت کے لیے لڑکی کی زبردستی شادی قابل دست اندازی پولس جرم ہوگا۔اسپتالوں میں خواتون نرسیں مرد مریضوں کی تیمار دارینہیں کر سکیں گی ۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Lightly beating wife permissible says ciis proposed women protection bill in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply