لاہور ہائی کورٹ نے کرپشن کیس میں پنجاب یونیورسٹی کے وائس چانسلر کو ضمانت دےدی

لاہور: لاہور ہائی کورٹ نے بدعنوانی، غیر قانونی تقررات اور قربا پروری کے حوالے سے ایک کیس میں قومی احتساب بیورو (ناب) کے ذریعہ گرفتار کیے گئے پنجاب یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر ڈاکٹر مجاہد کامران اور چار دیگر کی درخواست ضمانت منظور کر لی۔

ڈاکٹر کامران ، پروفیسر ڈاکٹر راس مسعود، پروفیسر ڈاکٹر لیاقت علی ، پروفیسر ڈاکٹر اورنگ زیب عالم گیر اور پروفیسر ڈاکٹر کامران عابد کو قومی احتساب بیورو نے 13اکتوبر کو گرفتار کیا تھا۔پروفیسر مجاہد کامران نے اپنی درخواست میں عذر پیش کیا تھا کہ بیورو نے کیس کی تحقیقات کی تکمیل سے پہلے ہی ان کی گرفتار ی کے وارنٹ جاری کر دیے تھے۔

جج نے اسی پروفیسر کو پہلی بار عدالت میں ہتھکڑی لگا کر پیش کرنے پر کہا تھا کہ قومی احتساب بیورو نے اساتذہ کو ہتھکڑی لگاکر پیش کرنے کی کیسے ہمت کی۔ڈاکٹر کامران اور چار دیگر کے خلاف جاری مقدمہ میں الزام لگایا ہے کہ انہوں نے 2013 سے2016کے درمیان زیادہ تر گریڈ17میں 550سے زادءغیر قانونی طریقہ سے تقررات کیے تھے۔

ان میں سے زیادہ تر کو ٹھیکے پر ملازم رکھا گیا تھا اور تقرر کے ضابطوں پر کوئی عمل آوری نہیں کی گئی تھی بلکہٹھیکوں کی تجدید کی گئی تھی۔

ڈاکٹر مجاہد پر یہ بھی الزام ہے کہ انہوں نے اپنی دوسری بیوی ڈاکٹر شاذیہ قریشی کو پنجاب یونیورسٹی لا کالج کا پرنسپل مقرر کیا تھا۔ان پر یہ بھی الزام ہے کہ انہوں نے اسکالر شپ دینے کے معاملہ میں بھی پسند نا پسند کی بنیاد پر انتخاب کیااور اپنے پسندیدہ طلبا کو ہی اسکالر شپ دی۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Lhc grants former pu vc bail in corruption case in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply