ملکہ برطانیہ سے کوہ نور واپس لانے کی عرضی لاہور ہائی کورٹ میں سماعت کے لیے منظور

Koh-i-Noorلاہور:لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس خالد محمود خان نے ملکہ برطانیہ دوئم سے کوہ نور ہیرا واپس لانے کے لیے حکومت پاکستان کو ہدایات جاری کرنے کی استدعاکرنے والی عرضی پر رجسٹرار کے دفتر کے اعتراض کو خارج کر دیا۔ جج نے دفتر کو ہدایت کی کہ اس عرضی کو کسی مناسب بنچ کے روبرو سماعت کے لیے پیش کیا جائے۔دفتر رجسٹرار نے عذر داری کے لائق سماعت ہونے پر یہ کہتے ہوئے اعتراض کیا تھا کہ ملکہ برطانیہ کے خلاف کسی مقدمہ کی سماعت کرنا لاہور ہائی کورٹ کے حیطہ اختیار سے باہر ہے۔بیرسٹر جاوید اقبال جعفری نے ایک عذرداری داخل کر کے الزام لگایا تھا کہ برطانیہ کوہ نور ہیرا دلیپ سنگھ سے چھین کر یو کے لے گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ اب وہ ہیرا 1953میں ملکہ ایلزبتھ دوئم کی تاجپوشی سے اب تک ملکہ کے تاج کی زینت بنا ہوا ہے۔وکیل نے کہا کہ ملکہ ایلزبتھ کا کوہ نور پر کوئی حق یا اجارہ داری نہیں ہے کیونکہ وہ پنجاب کا ثقافتی اثاثہ ہے اور اس کے شہری ہی اس کے مالک ہیں۔انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ وہ وفاقی حکومت کو ہدایت جاری کرے کہ دولت مشترکہ کا رکن ملک ہونے کے ناطے وہ کوہ نور ہیرا پاکستان واپس لائے۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Lhc accepts plea to bring koh i noor back in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply