فیصل آباد میںملزم کو چھڑانے کے لیے وکیلوں کی پولس سے ہاتھا پائی

لاہور: دہشت گردی الزامات کے تحت ایک کیس میں اپنے 30سے زائد ساتھیوں کو نامزد کیے جانے کے خلاف فیصل آباد میں متعدد وکیلوں نے مظاہرہ اور پر تشدد احتجاج کیا۔اتوار کے روز ڈسٹرکٹ کورٹ کے احاطے میں دیج کوٹ تھانہ کے انچارج اور ان کے عملہ کے ساتھ ہاتھاپائی کرنے پر وکیلوں کے خلاف مقدمہ دائرکیا تھا۔ان وکیلوں نے اس وقت ہاتھا پائی کی تھی جب تھانہ انچارج ایک ملزم کوجج کے سامنے پیش کرنے کے لیے عدالت پہنچے۔بتایا جاتا ہے کہ ملزم ایک وکیل کا بھائی تھا۔پیر کو وکیلوں کے نمائندوں نے پولس سے مقدمہ واپس لینے کہا لیکن پولس نے انکی بات ماننے سے انکار کر دیا۔جس پر وکیل بھڑک اٹھے اور کمیٹی چوک پر مظاہرہ کرنا شروع کر دیا اور ایک قریبی بازا ر بھی بند کرادیا۔اس کے بعد احتجاجی وکیلوں نے سی پی او دفتر میں آگ لگا دی اور وہاں تعینات تین پولس اہلکاروں کوزخمی کر دیا۔فیصل آباد تھانہ کے ترجمان عامر وحید نے بتایا کہ ملک ارشد نام کے ایک وکیل کا بھائی ملک شاہد کو مجموعہ تعزیرات پاکستان کی دفعہ 406 (سزا مجرمانہ اعتماد شکنی)کے تحت 2ملین روپے کے ایک معاملہ میں 25اپریل کو پولس نے کیس درج کیا تھا۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Lawyers attack faisalabad cpo office in protest against colleagues fir in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply