پاکستان میں انتہا پسندوں کو انتخابات لڑنے سے روکنے کے لیے نئے قانون کا مسودہ تیار

اسلام آباد:وفاقی حکومت نے ایک نئے قانون کا مسودہ تیار کیا ہے جس کے تحت کالعدم تنظیموں کے ارکان کو ملک میں ہونے والے ہر قسم کے انتخابات میں حصہ لینے سے روکا جاسکے ۔وزارت داخلہ نے انسداد دہشت گردی ایکٹ 1997 میں 2 نئی ترامیم متعارف کروائی ہیں تاکہ فورتھ شیڈول میں شامل کالعدم تنظیموں کے 8 ہزار چار سو ارکان اور نفرت پھیلانے والے دیگر افراد کو پار لیمانی اور بلدیاتی انتخابات لڑنے سے روکا جاسکے۔
تجویز کردہ ترامیم انسداد دہشت گردی کے سب سے بڑے ادارے ” قومی انسداد دہشت گردی محکمہ“ کی جانب سے سامنے آئی ہیں جس نے ملک کے بعض حصوں کی انتخابی سیاست میں کالعدم تنظیموں کے فعال کردار پر گہری تشویش کا اظہار کیا تھا۔
مذکورہ اقدام ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب وزارت خارجہ و داخلہ کی جانب سے کالعدم اور واچ لسٹ میں رکھی گئی تنظیموں کی ایک بڑی تعداد 2018 کے عام انتخابات میں شرکت کے لیے منصوبہ بندی کر رہی تھی اور یہ تنظیمیں بالخصوص جماعت الدعوہ اور اہل سنت والجماعت الیکشن کمیشن آف پاکستان سے خود کو رجسٹر کروانے کا منصوبہ بنا رہی تھیں۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Law to bar militants from contesting polls on the cards in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply