مولانا عامر حمزہ نے لشکر طیبہ سے انحراف کر کے نئی دہشت گرد تنظیم ’جیش منقفا“قائم کر لی

اسلام آباد: پاکستان میں جماعت الدعویٰ پر پابندی کے بعد فنڈ کی قلت کے باعث دہشت پسند تنظیم لشکر طیبہ اس وقت دو حصوں میں تقسیم ہو گئی جب اس کے مشترکہ بانی صدر مولانا عامر حمزہ نے اس سے ناطہ توڑ کر جیش منقفا نام سے ایک نیا دہشت گرد گروپ تشکیل دے لیا۔
مولانا عامر حمزہ 26/11 ممبئی حملوں کے اصل ملزم حافظ سعید کے نہایت قریبی ساتھی تھے۔انہیں حافظ سعید سے جو پاکستان میںجماعت الدعویٰ اور فلاح انسانیت فاؤنڈیشن چلاتے تھے، باقاعدہ فنڈ ملا کرتا تھا۔
لیکن پاکستان نے افراد اور کمپنیوں کی جانب سے حافظ سعید کے اداروں اور تنظیموں کو چندہ دیے جانے پر حالیہ پابندی عائد کر دیے جانے کے باعث تنظیم اور اس سے وابستہ ادارے اور گروپ زبردست مالی تنگی سے دوچا ہو گئے۔
جب مولانا عمر حمزہ کو پیسہ ملنا بند ہو گیا تو انہوں نے لشکر طیبہ سے ناطہ توڑ کر نوتشکیل دہشت پسند پارٹی کے لیے چندہ اکٹھا کرنے میں ہی عافیت جانی۔
وہ مبینہ طور پر جموں و کشمیر میںدہشت گردانہ حملے کرانے کا منصوبہ بنا رہے ہیں۔عامر حمزہ پاکستان کے پنجاب کے گوجرانوالہ کا رہائشی ہے اور2012میں امریکہ نے اسے عالمی دہشت گرد قرار دے دیا تھا۔ وہ 26/11ممبئی حملوں میں بھی ہندوستان کو انتہائی مطلوب دہشت گردوں میںسے ایک ہے۔

Title: lashkar e taiba splits maulana amir hamza forms new terror group in Urdu | In Category: پاکستان  ( pakistan ) Urdu News

Leave a Reply