پاکستان میں بچوں سے بدفعلی کے ویڈیو بنا کر والدین کو بلیک میل کرنے والے تین افراد کو سزائے عمر قید

لاہور: یہاں کی انسداد دہشت گردی عدالت (اے ٹی سی) نے قصور میں بچوں سے بدفعلی کے ایک ہولناک اسکینڈل میں ملوث تین کو عمر قید کی سزا سنا دی۔جن مجرموںکو عمر قید کی سزا سنائی گئی ہے ان کی شناخت حسیم احمد ، وسیم سندھی اور علیم آصف کے طور پرکی گئی ہے۔
ان پعر فی کس 3لاکھ روپےجرمانہ بھی عائد کیا گیا ہے۔یہ گروہ 2006سے2014تک سرگرم رہا اور اس دوران اس نے قصور میں سیکڑوں بچوں کو اپنا نشانہ بنایا۔ وہ انہیں لالچ دے کرلاتا تھا اور ان کو کیمرے کے سامنے غیر فطری فعل پر مجبور کرتا تھا اور پھر اس ویڈیو یا فوٹو سے ان کے گھر والوں کو بلیک میل کرتا تھا۔
اگست 2015میں ایک مقامی صحافی نے اس گروہ کا پردہ فاش کیا اور خبروں میں گروہ کی سرگرمیوں کے حوالے سے کہا کہ دو درجن افراد نے حسین والا گاؤں کے 280بچوں سے بدفعلی کر کے ان کے400ویڈیو بنائے ہیں۔ جس کے بعد ایک مشترکہ تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی گئی جس نے اس معاملہ کی تحقیقات کر کے اس وقت 20بچوں سے بدفعلی کیے جانے کی وارداتوں کی تصدیق کردی۔
لیکن حقوق انسانی کمیشن پاکستان نے ایک رپورٹ میں یہ تعداد کہیں زیادہ بتائی۔متاثرہ بچوں میںسے ایک کے والد نے تو اس دھمکی کے بعد کہ اس کے بیٹے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر پوسٹ کر دی جائے گی ایک ملین سے زیادہ روپے کی رقم بطور زرتاوان ادا کی۔

Title: kasur video scandal atc awards life sentences to three accused in Urdu | In Category: پاکستان  ( pakistan ) Urdu News

Leave a Reply