انٹیلی جنس بیورو کے افسران بالا ہی دہشت گردوں کو تحفظ دے رہے ہیں:آئی بی اہلکار کا الزام

اسلام آباد: انٹیلی جنس بیورو (آئی بی) کے ہی ایک سراغرساں نے الزام لگایا ہے کہ آئی بی خود دہشت گردوں کو تحفظ بہم پہنچا رہی ہے۔آئی بی کے ایک بر سرکار اسسٹنٹ سب انسپکٹر اے ایس آئی ملک مختار احمد شہزاد نے اپنے سینیئر افسروں پر الزام لگایا کہ وہ دہشت گردی کے الزام میں ماخوذ مشتبہ افراد کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کرتے ۔
اس ضمن میں اے ایس آئی نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں ایک عذر داری داخل کر کے درخواست کی ہے کہ وہ مکمل تحقیقات کے لیے اس معاملہ کو انٹر سروس انٹیلی جنس کے حوالے کر دے۔ شہزاد نے اپنی پٹیشن میں کہا ہے کہ اس نے 2007میں آئی بی جوائن کی تھی اور اس نے اس دوران کئی ایسے دہشت گرد گروہوں کے خلاف رپورٹ دی تھی جن کی جڑیں۔
ایران، ازبکستان،افغانستان ، شام اور ہندوستان میں تھیں۔ لیکن انٹیلی جنس رپورٹوںکی شکل میں ٹھوس شہادتیں بہم پہنچانے کے باوجود اس ضمن میں کوئی کارروائی نہیںکی گئی۔ شہزاد کی اس پٹیشن کو اسلام آباد ہائی کورٹ رجسٹرار دفتر نے آج جسٹس عامر فاروق کے سامنے پیش کی جنہوں نے کیس الامآباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس محمد انوار خان کاسی کو اس نوٹ کے ساتھ بھیج دیا کہ یہ معاملہ جسٹس شوکت عزیز صدیقی کو سونپ دیا جائے کیونکہ اسی قسم کا ایک معاملہ ان کی عدالت میں زیر سماعت ہے۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Intelligence bureau accused of protecting terrorists by one of its own spies in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply