پاکستان میں لوگ کم تعلیم یافتہ کیوں ہوتے ہیں

اسلام آباد: عام طور پر یہ مقولہ مشہور ہے کہ پڑھو گے لکھو گے تو بنو گے نواب ، جبکہ پاکستان میں کہاجاتا ہے کہ ”پڑھو گے لکھو گے تو دینا پڑے گا ٹیکس“۔جی ہاں ۔
پاکستان میں اونچی تعلیم حاصل کرنے سے پاکستانی نوجوان اسی لیے محروم ہیں کیونکہ اگر کسی طالب علم کا تعلیم پر سال میں دو لاکھ روپے سے زیادہ کا خرچ ہوتا ہے تو اسے 5فیصد ٹیکس ادا کرنا پڑتا ہے۔
گویا اسے سزا دی جارہی ہے کہ وہ تعلیم کیوں حاصل کر رہا ہے۔یہی وجہ ہے وہاں وزیر اعظم یا صدر بننے کے لیے تعلیم یافتہ ہونا یا کم از کم تعلیمی استعداد کی قید نہیں ہے۔اگر تعلیم یافتہ ہے تو یہ اس کی اضافی قابلیت سمجھی جاتی ہے کیونکہ سیاست تو اسے پہلے ہی خوب آتی ہے۔ ہاں اگر کسی اسکول میں چپراسی بننا ہے تو تعلیم یافتہ ہونا لازمی ہے۔
ایک سب سے بڑی بندش یہ بھی ہے کہ وہاں وزیر اعظم کیسا ہی کیوں نہ ہو اسے برا نہیں کہہ سکتے۔ اگر کسی نے وزیر اعظم وقت کو برا کہہ دیا تو اسے اچھاخاصہ جرمانہ بھرنا پڑے گا۔

Title: in pakistan 5 tax on education | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply