حکومت ۔تحریک لبیک معاہدے میں ثالثی کرنے والی فوج کون ہوتی ہے: اسلام آباد ہائی کورٹ

اسلام آباد: اسلام آباد ہائی کورٹ نے حکومت اور دھرنا قیادت کے درمیان معاہدے میں فوج کے کردار پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہاکہ اس معاملہ میں فوج ثالثی کرنے والی کون ہوتی ہے۔
جسٹس شوکت عزیز نے رد الفساد پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ ”فوج کیا ہے کہ وہ ثالث کا کردار ادا کرے۔ کس قانون کے تحت میجر جنرل کو یہ کردار ادا کرنے کے لیے کہا گیا۔
عدالت نے کہا کہ وزیر داخلہ یہ ثابت کرنے پر مصر ہیں کہ فوج تمام برائیوں سے پاک ہے۔جج نے وزیر داخلہ سے لزید استفسار کیا کہ دستاوزی پر چیف کمشنر اور انسپکٹرجنرل کے دستخط کیوں نہیں ہیں۔

Title: ihc criticizes armys role of mediator in govt tehreek agreement | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply