دیامر اسکولوں کو آگ لگانے کے واقعات میں افغانستان کے تربیت یافتہ دہشت گرد کا ہاتھ تھا:پولس رپورٹ

اسلام آباد: گلگت بلتستان پولس نے جمعرات کے روز کہا کہ دیام میں 14 اسکولوں کو نذر آتش کرنے کا ملزم، جو اس ہفتہ سرچ آپریشن کے دوران پولس کی گولی سے مارا گیا،افغانستان کا ایک تربیت یافتہ دہشت گرد تھا۔

دیامر کے پولس سپرنٹنڈنٹ رائے اجمل نے دیامر ڈپٹی انسپکٹر جنرل پولس(ڈی آئی جی) کو جو رپورٹ دی اس کے مطابق کمانڈر شفیع الرحمٰن پولس کے ساتھ فائرنگ کے تبادلہ میں مارا گیا۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پولس پارٹی کو دیکھ کر ملزم نے اس پر اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی جس میں کانسٹبل عارف حسین ہلاک ہو گیا اور ہیڈ کانسٹبل کرامت علی شدید زخمی ہو گیا۔جس کے بعد پولس نے پورے علاقہ کا محاصرہ کر لیا اور تلاشی شروع کر دی۔

شفیع الرحمٰن ، سعید الرحمٰن ، فداءالرحمٰن ،ضیاءالرحمٰن ،باسط، نصیر اللہ، شیر خان اور محمد ناصر کے خلاف فوجداری معاملہ درج کیا گیا تھا جن میں سے تین مشتبہ کو ،جن کی شناخت فدا ءالرحمٰن ، فیض الرحمٰن اور سعید الرحمٰن کے طور پرکی گئی ہے ،گرفتار کر لیا گیا۔

جبکہ کمانڈر شفیع کی فائرنگ کے تبادلہ میں موت ہو گئی ۔باقی پانچ کی تلاش جاری ہے۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: High profile afghan trained suspect allegedly involved in diamer school attacks police repor in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News
What do you think? Write Your Comment