پرویز مشرف غداری کیس میں چیف پرازیکیوٹر اکرم شیخ مستعفی

اسلام آباد: سابق فوجی حکمراں ریٹائرڈ جنرل پرویز مشرف کے خلاف غداری کیس میں چیف پرازیکیوٹرنے یہ کہتے ہوئے کہ وفاقی حکومت کی تبدیلی کے بعد وہ کیس میں مزید پیروی کرنے سے قاصر ہیں پرازیکیوشن کے سربراہ کے عہدے سے استعفیٰ دے دیا۔

نواز شریف حکومت نے 2013میں بر سر اقتدار آتے ہی 3نومبر2007کو ایمرجنسی نافذ کرنے کے حوالے سے سابق صدر کے خلاف غداری کیس میں محمد اکرم شیخ کو چیف پرازیکیوٹر مقرر کر دیا تھا۔اکرم نے اپنے استعفیٰ نامہ میں ،جو انہوں نے دوشنبہ کو داخلہ سکریٹری کو بھیج دیا،مرکز میں حکومت میں تبدیلی کے امکان کے بعد اس کیس پر مزید کام کرنے سے اظہار معذرت کیا۔

ابتداءمیں 74سالہ مشرف کی قانونی ٹیم نے مسٹر اکرم شیخ کے چیف پرازیکیوٹر کے طور پر تقرر پر اعتراض کیا تھا لیکن غداری کیس کی خصوصی عدالت اور اسلام آباد ہائی کورٹ نے اس چینلج کو مسترد کر دیا تھا۔

خصوصی عدالت نے مارچ 2014میں غداری کا مجرم قرار دیا تھا۔استغاثہ نے اسی سال ستمبر میں شہادت پیش کی تھی۔تاہم اس کے بعداسلام آباد ہائی کورٹ کے حکم امتناعی اور عدالت عظمیٰ کے حکم پر ایکزٹ کنٹرول لسٹ سے نام حذف کر دیے جانے کے باعث مشرف کے ملک چھوڑ جانے کے باعث خصوصی عدالت سابق ڈکٹیٹر کے خلاف کارروائی نہیں کر سکی تھی۔

خصوصی عدالت نے پرویز مشرف کو اشتہاری مجرم قرار دے کر ان کی املاک قرق کرنے کا حکم دے دیا لیکن عدالتوں میں مقدمات ہونے کے باعث ان کی جائیداد کی بھی قرقی نہیں ہو سکی۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Head of prosecution in treason case against pervez musharraf quits in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply