حافظ سعید کی پٹیشن پر اسلام آباد ہائی کورٹ نے حکومتی اداروں کو نوٹس جاری کرد یے

اسلام آباد: جماعت الدعویٰ کو اقوام متحدہ کی واچ لسٹ پر ہونے کے باعث ممنوعہ قرار دینے والے صدارتی فرمان کو چیلنج کرنے والی جماعت الدعویٰ کے سربراہ حافظ محمد سعید کی پٹیشن کی سماعت کرتے ہوئے اسلام آباد ہائی کورٹ کے جج جسٹس عامر فاروق نے صدر کے پرنسپل سکریٹری قانون،کیبینٹ ڈویژن اور اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کا نوٹس جاری کر دیا۔
واضح رہے کہ صدر ممنون حسین نے حافظ سعید کی جماعت الدعویٰ اور فلاح انسانیت فاؤندیشن جیسی تنظیموں کو کالعدم تنظیمیں قرار دینے کے لیے گذشتہ ماہ انسداد دہشت گردی قانون مجریہ 1997میں ترمیم کے لیے ایک فرمان جاری کیا تھا جس میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی فہرست میں مندرج ادہشت گرد افراد اور تنظیموں کو کالعدم قرار دیا گیا تھا۔
یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ حافظ سعید نے لشکر طیبہ سے قطع تعلق کر کے جماعت الدعویٰ قائم کی گئی تھی۔ حافظ سعید نے عدالت کو بتایا کہ ہندوستان اور پاکستان کے دباؤ کے باعث 2009 اور 2017 میں انہیں نظر بند کیا گیا اوراب پھر ان دونوں کے دباؤ میں انہیں گرفتار کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

Title: hafiz saeed challenges ordinance banning jud | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply