بے قصور ثابت کرنے کے لیے چار مزدوروں کو گرم تیل پر ننگے پاؤں چلنا پڑا

رحیم یار خان: ایک زبردست اثر و رسوخ رکھنے والے زمیندار نے چوری کے الزام میں چار مزدوروں کو ننگے پیر گرم تیل پر چلنے کی سزا دی۔ یہاں سے34کلو میٹر کی دوری پر چک153-پی میں چوری کے الزام میں خود کو بے قصور ثابت کرنے کے لیے جن چار گاو¿ں والوں کو یہ سزا دی گئی ان کی شناخت 14سالہ سعدیہ، 24سالہ کاشف، 21سالہ شہزاد اور19سالہ عاصم کے طور پر کی گئی ہے۔موصول اطلاع کے مطابق محسن نام کے اس جاگیردار کے گھر سے کچھ روز پہلے سونے چاندی کے گہنے چوری ہو گئے تھے ۔ شوکت نام کے ایک نقلی عامل کے کہنے پراس نے ان چاروں کو اپنے گھر بلایا اور انہیں خود کو بے قصور ثابت کرنے کے لیے یہ یہ یقین دلاکرگرم تیل پر ننگے پاو¿ں چلنے پر مجبور کیاکہ اگر وہ بے قصور ہوں گے تو ان کے پیر نہیں جلیںگے اور ثابت ہو جائے گا کہ انہوں نے گہنے نہیں چرائے ہیں۔لیکن جب ان کے پیر جل گئے تو اس زمیندار نے ان چاروں کے بڑوں کو بلایا اور ان سے مسروقہ زیورات و نقدی کا مطالبہ کیا۔ان لوگوں نے پولس کو مطلع کیا لیکن پولس کے پہنچنے سے پہلے ہی وہ زمیندر رفو چکر ہو گیا۔ کہا جاتا ہے کہ چونکہ وہ بہت اثر دار تھا اس لیے اس کے گھر پر چھاپہ مارنے سے پہلے ہی اسے پولس کی آمد کی خبر دے دی گئی ہوگی۔تاہم پولس نے محسن ، شوکت ، مدثر، عاطف اور ریاض کے خلاف دفعہ324,148اور 149کے تحت معاملات درج کر لیے۔

Title: four villagers had to walk on boiled oil to prove innocence in pakistan | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply