بلوچستان میں مسلکی دہشت گردی جاری،بس میں گھس کر 4شیعہ خواتین کو گولیوں سے بھون ڈالا،2زخمی

کوئٹہ: پاکستان میں بلوچستان میں مسلکی دہشت گردی کا ایک اور واقعہ اس وقت ہوا جب صوبہ کے دارالحکومت کوئٹہ میں موٹر سائیکلوں پر سوار مسلح افراد نے ہزارہ شیعہ برادری کے لوگوں پر اندھا دھند فائرنگ کر دی۔ جس میں چار شیعہ خواتین ہلاک اور دو دیگر زخمی ہو گئیں۔
بلوچستان حکومت کے ترجمان نے بتایا کہ کل کوئٹہ کے کیرانی روڈ پر مسلح افراد نے پوڈ گلی چوک علاقہ کے قریب ایک سواری بس کو اس وقت روکا جب بس ہزارہ شہر پہنچنے والی تھی اور ایک بندوق بردار بس کے اندر گھس گیا اور اس نے بس میں سوار 8 خواتین میں سے 6 کو جو شیعہ فرقہ سے تعلق رکھتی تھیںنشانہ بنا کر فائر کیے اور فرار ہو گئے۔
پولیس نے ان کی تلاش شروع کردی ہے۔ کوئٹہ کے کمشنر نے اس حملے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ جس طرح سے ہزارہ کمیونٹی کے لوگوں کو نشانہ بنایا گیا ہے اس سے لگتا ہے کہ یہ فرقہ وارانہ حملہ ہے لیکن ہم معاملے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔ پاکستان میں اقلیتوں پر حملہ کوئی نئی بات نہیں ہے۔ گزشتہ سال مئی میں اسماعیلی کمیونٹی کے 43 لوگو کو قتل کر دیا گیاتھا۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Four hazara women killed as gunmen open fire on quetta bus in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply