سکھ نوجوان کی پگڑی کی توہین کرنے کے پانچ ملزمین ضمانت پر رہا

اسلام آباد: پاکستان میں چیچہ وطنی کے سول جج طاہر منظور نے سر عام مہندر پال سنگھ نام کے ایک سکھ نوجوان کی پگڑی کی بے حرمتی کرنےپر توہین مذہب کے الزامات میں گرفتار کیے جانے والے پانچ ملزموں کو ضمانت پر رہا کر دیا۔مہندر پال سنگھ نے کہا تھا کہ وہ صوبہ پنجاب میں فیصل آباد سے ملتا ن آرہاتھا کہ راستے میں بس میں خرابی آگئی۔جس کی شکایت اس نے ایک ٹرمنل پر کی تو اس بس کے عملہ اور ٹریول کمپنی کے مالک نے ، جس کی یہ بس تھی، اس کے ساتھ دھکا مکی کی اور اس کی پگڑی گرا دی۔ تفتیشی افسر عبد الستار نے کہا کہ اس میں ملزم باقر علی، راشد گوجر، فیض عالم، شکیل اور سوداگر کو ضمانت پر چھوڑ دیا گیا۔
ان سب کو30اپریل کو گرفتار کیا گیا تھا۔مہندر پال سنگھ کے مطابق ملزموں کے خلاف کسی عبادت گاہ کی بے حرمتی کرنے اور قابل ضمانت معاملات کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ مسٹر سنگھ نے کہا کہ وہ کوئی عبادت گاہ تو ہیں نہیں۔بلکہ پاکستان شہری ہیں اور وہسکھ مذہب کے پیروکار ہیں۔اور ان کی مقدس مذہبی علامات میں سے ایک کی بے حرمتی کی گئی ۔پولس کو تعزیرات پاکستان کی دفعہ 295/Aکی دفعہ بھی لگانا چاہیے تھی جس کے تحت ناقابل ضمانت جرائم آتے ہیں اور ان میں زیادہ سے زیادہ سزا دس سال قید ہے۔چھٹے ملزم کا، جو اس بس ٹرمنل کا مالک ہے، ابھی تک کچھ سراغ نہیں لگ سکا ہے ۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Five accused of blasphemy against sikh man granted bail in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply