پاکستان میں زہریلے لڈو کھا کر ہلاک ہونے والوں کی تعداد بڑھ کر 23ہو گئی

لاہور: صوبہ پنجاب کے شہر ملتان کے قریب لیار ضلع کے ایک گاو¿ں میں20اپریل کو بیٹے کی پیدائش کی خوشی میں بانٹے گئے لڈو کھا کر ہلاک ہونے والوںکی تعداد اس وقت بڑھ کر23ہوگئی جب شدید بیمار پڑجانے والے مزید 9افراد نے دم توڑ دیا۔واقعہ یوںبتایا جاتا ہے کہ 19اپریل کو سجاد حسین نام کے ایک شخص کے یہاں بیٹا تولد ہوا ۔دوسرے روز اس نے ساڑھے چار کلو لڈو خریدے اور سب رشتہ داروں میں تقسیم کیے ۔لڈو کھاتے ہی پانچ کی موقع پر ہی موت ہو گئی ۔ بعد میں خود سجاد حسین اس کی ایک بہن، سات بھائی دو بھتیجیاں اور ایک بھتیجہ بھی یکے بعد دیگرے انتقال کر گئے ۔ مقامی پولس افسر منیر احمد کے مطابق پیر کے روز تک ہلاک شدگان کی تعدادبڑھ کر23ہو گئی۔ جبکہ مزید52ابھی مختلف اسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔ضلع کے ایک سینیئر پولس افسر نے کہا کہ جس مٹھائی کی دکان سے یہ لڈو خریدے گئے تھے اس کے مالکوں (دو بھائی) اور ایک ملازم کو گرفتار کر لیا گیا۔ حلوائی کی دکان کے برابر میں کیڑے مارنے والی دواو¿ں کی دکان تھی ۔ اس دکان میں چونکہ مرمت کا کام چل رہا تھا اس لیے زہریلی دواو¿ں کے پیکٹ اس دکاندار نے حلوائی کی دکان میں رکھ دیے تھے۔ چونکہ حلوائی مٹھائیوں میں بیکنگ پاو¿ڈر بھی ملاتے ہیں اس لیے ملازم نے غلطی سے اس زہریلے پاو¿ڈر کے پیکٹ کو بیکنگ پاو¿ڈر سمجھ کر استعمال کر لیا ہوگا۔

Read all Latest pakistan news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from pakistan and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Father and 11 relatives among 23 people killed by eating poisonous sweets in Urdu | In Category: پاکستان Pakistan Urdu News

Leave a Reply