عدالتی فیصلہ آنے تک طالبان کے سابق ترجمان کو رہا نہ کیا جائے:پشاور ہائی کورٹ

پشاور: یہاں کی ہائی کورٹ نے حکم دیا ہے کہ سابق ترجمان طالبان احسان اللہ احسان کو عدالتی حکم جاری کیے جانے سے پہلے ہر گز رہا نہ کیا جائے۔ پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس یحییٰ آ فریدی نے حکومت کو یہ بھی حکم دیا کہ ملزم احسان اللہ احسان کے خلاف تحقیقات جاری رکھی جائیں ۔
عدالت نے یہ تاکید بھی کی کہ سابق ترجمان طالبان کی رہائی کے لیے عدالتی حکم ضروری ہے۔ عدالت نے حکومت سے کالعدم تنظیم تحریک طالبان کے سابق ترجمان احسان اللہ احسان کی گرفتاری اور اس کے بعد کی تحقیقات عدالت کے سامنے پیش کرنے کے بھی احکامات جاریکیے ہیں۔واضح رہے کہ تین سال قبل آرمی پبلک سکول میں ہلاک ہونے والے ایک طالب علم کے والد کی طرف سے ایڈووکیٹ فضل خان نے پشاور ہائی کورٹ میں درخواست جمع کروائی تھی۔
جس میں مطالبہ کیا گیا تھا کہ کالعدم تحریک طالبان کے سابق ترجمان احسان اللہ احسان کی تحقیقات منظر عام پر لائی جائیں اور انہیں عدالت کے سامنے پیش کیا جائے۔انہوںنے عدالت سے یہ استدعا بھی کی تھی کہ یہ کیس فوجی عدالت کو منتقل کر دیا جائے۔

Title: do not release ehsan ullah ehsan peshawar high court | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply