میری حکومت کوترک صدر اردوغان کے نقش قدم چل کر جڑیں مضبوط کرنی چاہئیں:نواز شریف

اسلام آباد: پنامہ لیکس کے تنازعہ اور سول وملٹری کشیدگی میں گھرے وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ ان کی حکومت کو چاہئے کہ وہ ترک صدر رجب طیب اردوغان کے نقش قدم چلتے ہوئے خود کو منوائے۔
گذشتہ کچھ ہفتوں سے وزیر اعظم اپنے مشیروں ، کابینی اراکین ،پاکستان مسلم لیگ نواز کے عہدیداران اور اتحادیوں کے ساتھ باقاعدہ مشاور ت کر رہے ہیں۔ مشاورت کے عمل سے وابستہ ایک ذریعہ نے ڈان کو بتایا کہ ان تبادلہ خیال کے دوران ایک موقع پر تو انہوں نے یہ تک حوالہ دے دیا کہ کس طرح صدر اردوغان نے کسی دور کی ایک مضبوط فوج اور اپنے سیاسی حریفوںسے ٹکر لی۔ کچھ پارٹی لیڈروں نے وزیر اعظم کو مشورہ دیا کہ سیاسی حریفوں کے خلاف سخت موقف اختیار کرنے سے گریز کریں اور حسب معمول فوجی اعلیٰ افسران سے صلاح و مشورہ جاری رکھیں۔
لیکن 9پارٹی حزب اختلاف اتحاد کے ان کے کنبہ کے خلاف مظاہرے اور اس کے احتساب کا مطالبہ حکومت کے گلے کا پھندہ بنتا جا رہا ہے اس لیے خود وزیر اعظم اور ان کے معتمدین خاص کا خیال ہے کہ پی ایم ایل این کو اپنے موقف پر قائم رہنا چاہئے۔

Title: crisis mode pm looks up to erdogan for inspiration | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply