نواز اور مریم کی عدلیہ مخالف تقریروں کے نشریہ پر پابندی کا سپریم کورٹ نے ا زخود نوٹس لے لیا

اسلام آباد:چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثارنے سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف ان کی بیٹی مریم نواز اور ان کی پارٹی پاکستان مسلم لیگ نواز کے لیڈروں کی تقاریر کے نشریہ پر پابندی عائد کرنے کے حوالے سے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلہ پر از خود نوٹس لے لیا۔ جس پر منگل کو ہی سماعت کی جائے گی۔
اس ضمن میں سپریم کورٹ سے پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) کو نوٹس جاری کیا جاچکا ہے۔واضح ہو کہ ایک روز پہلے ہی لاہور ہائی وکرٹ نے نواز، مریم ،وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اور دیگر پی ایم ایل این لیڈروں کی عدلیہ مخالف تقریر کے خلاف داخل کی گئی2 درجن سے زائد عذر داریوں پر پیمرا کو حکم دیا تھا کہ اس معاملہ پر15روز کے اندر فیصلہ کر دیا جائے اور اس وقت تک ان تقاریر کو نشر نہ کیا جائے۔
یہ فیصلہ سنانے والی جسٹس مظاہر علی نقوی کی سربراہی والی تین ججی بنچ نےیہ بھی رولنگ دی کہ عدالت آئندہ دو ہفتوں کے دوران پیمرا کے طریقہ کار پر نظر رکھے گی کہ وہ عدالتی حکم پر کیسے عمل آوری کرتی ہے۔

Title: cjp takes suo motu notice of lhc ban on nawazs anti judiciary speeches in Urdu | In Category: پاکستان  ( pakistan ) Urdu News

Leave a Reply