عمران خان نے انتخابی مہم پر پابندی کے الیکشن کمیشن کے حکم کو ہائی کورٹ میں چیلنج کر دیا

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیرمین عمران خان نے انتخابی مہم چلانے کے لیے پارٹی رہنماؤں ، ممبران پارلیمنٹ اور حکومتی اہلکاروں کو کسی بھی حلقہ میں انتخابی مہم چلانے پر پابندی لگانے کے الیکشن کمیشن کے حکم کو اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کر دیا۔چئیرمین پی ٹی آئی عمران خان کی جانب سے ہائی کورٹ میں جمع کرائی گئی درخواست میں کہا گیا ہے کہ ہے الیکشن کمیشن کے نوٹیفکیشنز بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی کے ساتھ ساتھ بدنیتی پر مبنی ہیں جس میں صرف اور صرف اپوزیشن کو جلسے جلوسوں سے روکا جارہا ہے۔
درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ الیکشن کمیشن کے تینوں نوٹیفکیشنز کو کالعدم قرار دیا جائے اور الیکشن کمیشن کے پاس زیر التواءمقدمات کو بھی ختم کیا جائے۔ کیونکہ آئین پاکستان کے مطابق تمام سیاسی جماعتوں کو سیاسی جلسوں اور عوامی رابطوں کا آئینی اور قانونی حق حاصل ہے۔پی ٹی آئی رہنما نعیم الحق کا کہنا ہے کہ وزیراعظم سرکاری فنڈز کا بے دریغ استعمال کرتے ہوئے جلسے کررہے ہیں پھر بھی ان کے خلاف کوئی نوٹیفکیشن جاری نہیں ہوتا ۔انہوں نے کہا کہ آئین کی رو سے کسی بھی شخص پر اس کام کے لیے پابندی نہیں لگائی جا سکتی جس کا اسے قانون کے تحت استحقاق حاصل ہو۔
اور اگر پابندیاں لگائی جاتی ہیں تو وہ صرف اور صرف امن و قانون برقرار کھنے کے لیے ہی لگائی جاتی ہیں۔خان نے مزید کہا جکہ ان کا ان کی پارٹی کا یہ قابل تحسین ریکارڈ رہا ہے کہ اس نے پرامن اور غیر مسلح ریلیاں کیں،126روز تک پر امن دھرنا دیا جس اس امر کا ثبوت ہیں کہ مدعی اور اس کی پارٹی قانون ، آئین اور عوامی ضابطہ کی عملداری اور بالادستی میں یقین رکھتی ہے۔

Title: bar on election campaigning imran challenges ecp order in court | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply