وزیر داخلہ پاکستان قاتلانہ حملہ میں زخمی،مشتبہ گرفتار

لاہور: وزیر داخلہ احسن اقبال اس وقت قاتلانہ حملہ میں بال بال بچ گئے جب اتوار کے روز ان کے انتخابی حلقہ نارووال میں ایک جلسہ کے دوران ان کو نشانہ بنا کر فائر کیا گیا ۔
انہیں پولس انسپکٹر جنرل ریٹائرڈ کیپٹن عارف نواز نے ڈان نیوز کو بتایا کہ پولس نے ایک22سالہ مشتبہ کو شکر گڑھ تحصیل کے کنجرور قصبہ میں موقع پر گرفتار کر لیا ۔اس نے ختم نبوت معاملہ میں وزیر پر گولی چلانے کا اعتراف کر لیا۔ اس کی شناخت ویروم گاو¿ںکے عابد حسین کے طور پر کی گئی ہے۔ وہ 30بور کی بندوق لے کر نکڑ جلسہ میں کسی طرح گھس گیا ۔
اور پھر جیسے ہی احسن اقبال نے تقریر ختم کی اس نے 15گز دور سے ہی اس نے احسن پر گولی داغ دی ۔گولی انکے بازو سے رگڑ کھاتے ہوئے ان کے پیٹ میں لگی۔ انہیں فوراً اسپتال منتقل کرد یا گیا اور وہاں موجود لوگوں نے بندوق بردار کو مزید فائر کرنے کا موقع دیے بغیر ہی اسے دبوچ لیا۔کیپٹن عارف نے مزید کہا کہ اس امر کی بھی تحقیقات کی جارہی ہے کہ واردات اور کون لوگ ملوث تھے۔
اس واردات کی سیاسی پارٹیوں ، لیڈروں اور ملک کے دیگر اداروں نے شدت سے مذمت کی۔واضح ہو کہ چند ماہ قبل بھی احسن اقبال پر ان کے آبائی وطن ناروال میں جوتا پھینکا گیا تھا۔

Title: ahsan iqbal survives assassination bid hospitalised | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply