افغان حکومت سے مذاکرات کے لیے طالبان کا وفد پاکستان پہنچ گیا

کراچی: پاکستان میں سفارتی ذرائع کے حوالے سے بی بی سی اردو نے خبر دی ہے کہ قطر میں مقیم افغان طالبان کا ایک وفد حکومت افغانستان سے مذاکرات کے لیے کراچی پہنچ گیاہے۔جبکہ خارجہ دفتر نے کہا کہ اسے کسی وفد کی پاکستان آمد کی اطلاع نہیں ہے۔ کابل کے قلب میں واقع سیکورٹی سروسز کے دفاتر کو نشانہ بنا کر کیے جانے والے زبردست دہشت گردانہ حملہ کے بعد، جسے2001میں طالبان کی اقتدار سے بے دخلی کے بعد کیے جانے والے ہلاکت خیز حملوں میں سے ایک کہا جاتا ہے، مشاہدین نے کہا کہ پاکستان طالبان پر دباو¿ ڈال رہا ہے کہ وہ امن مذاکرات میں شامل ہو جائیں۔مذاکراتی عمل کے دوران پاکستان میں مقیم طالبان کے نمائندے افغان حکومت کے ساتھ مذاکرات کی میز پر جمع ہو ںگے۔ یہ تبدیلی اس وقت رونما ہوئی جب افغان صدر اشرف غنی نے دھمکی دی کہ اگر پاکستان نے طالبان کے خلاف کارروائی کرنے سے انکار کیا تو اس کے خلاف سخت سفارتی کارروائیاں کی جائیں گی۔ کابل حملہ کے بعد ،جس میں 64افراد ہلاک ہوئے تھے، اشرف غنی کا یہ نیا سخت موقف ہے ۔افغان صدر نے پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ یہ واضح کر دینا چاہے ہین کہ انہیں اب کوئی توقع نہیں ہے کہ پاکستان طالبان کو مذاکرات کی میز پر لائے گا۔لیکن ہم چاہتے ہیں پاکستان وعدہ ایفا کرے اور اپنی سرزمین پر طالبان کے ٹھکانوں،پناہ گاہوں اور قیادت کے خلاف فوجی کارروائی کرے۔

Title: afghan taliban delegation in karachi for talks with afghan govt | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply