پاکستان میں افغان پناہ گزیں کیمپ دہشت گردوں کا محفوظ مسکن بن گئے: سرتاج عزیز

اسلام آباد: وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کے مشیر برائے امور خارجہ سرتاج عزیز نے کہا ہے کہقبائلی علاقوں میں مسلح افواج کی کارروائی میں انتہاپسندوں کا بنیادی ڈھانچہ تباہ ہونے کے بعد اندرون پاکستان واقع افغان پناہ گزیں کیمپس دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہ میں تبدیل ہو گئے۔
سماع ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ افغان پناہ گزیں پاکستان کے لیے ایک مسئلہ بن گئے ہیں کیونکہ یہ پناہ گزیں کیمپ دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہ بن رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مرکز کے زیر انتظام خطہ میں ہم نے اپنی گرفت مضبوط کر لی ہے لیکن اگر افغان سرحد ایسی ہی غیر منظم رہیں تو ہمارے قبائلی علاقے محفوظ نہیں رہ سکتے۔
انہوں نے افغان پناہ گزینوں کو ان کے وطن واپس بھیجنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ وطن واپسی بتدریج ہوگی اور پاکستان کو اس کے لیے ایک لائحہ عمل مرتب کرنے کی ضرورت ہے۔ ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ افغان اور پاکستان کے وفود کے درمیان تبادلہ خیال کافی خوشگوار اور دوستانہ ماحول میں ہوا اور فریقین سرحدی انتظام کے لیے ایک مکینزم تیار کرنے پر راضی ہو گئے۔
افغانستان کے ساتھ حالیہ کشیدگی کے حوالے سے عزیزنے دعویٰ کیا کہ افغانستان پر روسی حملے کے دوران پاکستان نے جو پالیسیاں بنائی تھیں اس کا وہ خمیازہ بھگت رہا ہے۔50لاکھ افغان پاکستان منتقل ہو گئے وہ اپنے ساتھ منشیات اور اسلحہ بھی بھاری مقداد میں لے آئے جس سے پاکستان میں عدم استحکام پیدا ہوا۔

Title: afghan refugee camps safe havens for terrorists aziz | In Category: پاکستان  ( pakistan )

Leave a Reply