امریکہ نے یک رخی نظام کی پالیسیاں اختیار کر کے بین الاقوامی تکثیریت کو خطر میں ڈال دیا

تہران: ایران کے سابق وزیر خارجہ کمال خرازی نے کہا ہے کہ امریکہ نے یکطرفہ پالیسیاں اپنا کر بین الاقوامی تکثیریت کو خطرے میں ڈال دیا ہے۔ایران کی اسٹریٹجک کونسل برائے خارجہ تعلقات کے چیرمین خرازی نے مزید کہا کہ امریکی یکطرفیت سے بین الاقوامی سیاسی افق پر کثیر جہتی پالیسیوں کو خطرے سے دوچار کر دیا ہے۔

ایران کے ساتھ جوہری معاہدے، اقوام متحدہ ایجوکیشنل ، سائنٹیفک اینڈ کلچرل آرگنائزیشن (یونیسکو) اور پیرس معاہدے سے امریکہ کا باہر ہوجانا اس امر کی نشاندہی کرتا ہے کہ امریکہ یک رخی نظام پر مبنی پالیسیوں پر عمل پیرا ہے۔ خرازی نے دنیا کے تمام ممالک سے اپیل کی کہ بین الاقوامی نظام میں تکثیریت کے تحفظ کے لیے عملی اقدامات کریں۔

انہوں نے کہا کہ اگر انمعاہدوں کا جنکا اقوام متحدہ بھی احترام کرتا ہے دفاع نہ کیا گیاتو عالمی امن و سلامتی کی کوئی ضانت باقی نہیں رہے گی۔یہ معلوم کیے جانے پر کہ 2015کے جس جوہری معاہدے سے امریکہ یکطرفہ طور پر باہر ہو گیا ہے ایران اس کا کیسے پابند رہے گا خرازی نے کہا کہ ایران معاہدے کی حدود کے اندر اپنے عہد اور وعدوں کا پابند ہے اور اب یہ یورپی ملکوں کا کام ہے کہ وہ امریکہ کے باہر ہوجانے کے بعد ایران کو معاہدے کاپابند بنائے رکھنے کے اسے مطلوبہ ضمانتیں دیں۔اگر ایران کے قومی مفادات محفوظ رہے تو ہم معاہدے میں رہیں گے۔

Read all Latest news news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from news and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Us endangering global policies former iranian fm in Urdu | In Category: خبریں News Urdu News

Leave a Reply