کشمیرمیں انتہاپسندوں نے پی ڈی پی کارکن اور ایک کیبل آپریٹر کو ہلاک کر دیا

سری نگر: وادی کشمیر کے جنوبی اضلاع شوپیان اور اننت ناگ میں گذشتہ 12 گھنٹوں کے اندر نامعلوم حملہ آوروںنے ایک کیبل آپریٹر اور حکمران جماعت پی ڈی پی کے سابق پنچ کو ہلاک کر دیا۔ ریاستی پولیس کا کہنا ہے کہ کیبل آپریٹر ہلال احمد ملک کی ہلاکت میں دو مقامی انتہا پسند ملوث ہیں جن کی شناخت زبیر احمد ترے ولد بشیر احمد ترے ساکنہ بونہ بازار شوپیان اور عمر نذیر ملک عرف خطاب ولد نذیر احمد ملک ساکنہ ملک گنڈ شوپیان کے بطور ظاہر کردی گئی ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ضلع اننت ناگ کے شانگس سے پیر کی صبح حکمران جماعت پی ڈی پی کے سابق پنچ شبیر احمد وانی کی لاش ملنے کے ساتھ جنوبی کشمیر میں 19 اگست سے نامعلوم افراد کے ہاتھوں ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد بڑھ کر 4 ہوگئی ہے۔ سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا کہ ضلع اننت ناگ کے نوگام شانگس میں پیر کی صبح اس وقت تشویش کی لہر دوڑ گئی جب مقامی لوگوں نے 45 سالہ شبیر احمد وانی ولد عبدالرحمان کی خون میں لت پت لاش ا±س کے گھر سے کچھ دوری پر پڑی ہوئی دیکھی۔ انہوں نے بتایا کہ مقامی لوگوں نے فوری طور پر پولیس کو مطلع کیا جس کے بعد پولیس کی ایک پارٹی نے موقع پر پہنچ کر لاش کو اپنی تحویل میں لے لیا۔ ذرائع نے بتایا کہ طبی اور قانونی لوازمات کی ادائیگی کے بعد مہلوک کی لاش اس کے رشتہ داروں کے حوالے کردی گئی۔
انہوں نے بتایا کہ شبیر احمد کو کسی دھار دار ہتھیار سے ہلاک کیا گیا تھا۔ انہوں نے بتایا کہ مقتول حکمران جماعت پی ڈی پی کا سابق پنچ تھا۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ شبیر احمد کی ہلاکت کے سلسلے میں کیس درج کرکے معاملے کی تحقیقات شروع کردی گئی ہے۔ اس سے قبل نامعلوم بندوق برداروں نے گذشتہ شام کیبل آپریٹر ہلال احمد ملک کو ضلع اسپتال شوپیان کے نذدیک گولیاں چلاکر ہلاک کردیا۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ مشتبہ انتہاپسندوں نے گذشتہ شام ضلع شوپیان میں مقامی کیبل آپریٹر ہلال احمد اندھا دھند فائرنگ کر کے اس کے جسم کو چھلنی کر دیا۔ انہوں نے بتایا کہ ہلال احمد کو پہلے مقامی اسپتال اور بعدازاں سری نگر منتقل کیا گیا، تاہم وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا۔ ذرائع نے بتایا کہ 35 سالہ ہلال احمد گذشتہ 15 برسوں سے ٹاو¿ن میں ٹی وی کیبل ٹیٹ ورک چلا رہا تھا۔ اگرچہ کسی بھی انتہا تنظیم نے اس ہلاکت کی ذمہ داری قبول نہیں کی، تاہم ریاستی پولیس کا کہنا ہے کہ ہلاکت کے اس واقعہ میں ملوث دو انتہا پسندوں کی شناخت کرلی گئی ہے۔ ضلع شوپیان سے موصولہ اطلاعات کے مطابق کیبل آپریٹر ہلال احمد کو پیر کی صبح سینکڑوں لوگوں کی موجودگی میں سپرد لحد کیا گیا۔ اس دوران سرکاری ذرائع نے بتایا کہ جنوبی کشمیر میں 19 اگست سے نامعلوم افراد کے ہاتھوں ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد بڑھ کر 4 ہوگئی ہے۔ ضلع شوپیان کے ناگہ بل سے اتوار کی صبح ایک 16 سالہ نوجوان گوہر احمد ڈار ولد عبدالرحمان ڈار ساکنہ ارپورہ کی گولیوں سے چھلنی لاش برآمد ہوئی تھی۔ اس سے قبل 19 اگست کو ضلع اننت ناگ کے اگجن دیالگام میں نامعلوم بندوق برداروں نے پی ڈی پی کے ایک کارکن محمد اسحاق پرے ولد عبدالغنی پرے پر گولیاں چلاکر اسے ہلاک کردیا۔

Read all Latest kashmir news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from kashmir and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Suspected militants gun down cable operator a pdp worker in kashmir in Urdu | In Category: کشمیر Kashmir Urdu News

Leave a Reply