کشمیر میں طلبا کے احتجاجی مظاہرے اور سیکورٹی فورسز کے ساتھ تصادم 20ویں روز بھی جاری

سری نگر:وادی کشمیر میں طالب علموں کی جانب سے احتجاجی مظاہروں کا نہ تھمنے والا سلسلہ جمعرات کو بیسویں روز بھی جاری رہا۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق طالب علموں نے شمالی کشمیر کے ایپل ٹاون سوپور میں سڑکوں پر نکل کر شدید احتجاجی مظاہرے کئے اور سیکورٹی فورسز کی جانب سے آنسو گیس کے استعمال کے بعد طرفین کے مابین شدید جھڑپوں کا سلسلہ شروع ہوا ، جوتقریباً تین گھنٹے تک جاری رہا۔ ان جھڑپوں میں کم از کم آدھ درجن طالب علموں اور متعدد سیکورٹی فورس اہلکاروں کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ رپورٹوں کے مطابق سیکورٹی فورسز کی جانب سے آنسو گیس کے شدید استعمال کی وجہ سے کم از کم ایک درجن طالبات بے ہوش ہوگئیں۔
اگرچہ وادی میں ابتدائی طور پر طالب علموں کی جانب سے احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ 15 اپریل کو سیکورٹی فورسز کی جانب سے ڈگری کالج پلوامہ میں طالب علموں کے خلاف طاقت کے استعمال کے خلاف بطور احتجاج شروع ہوا تھا۔ تاہم طالب علموں کے یہ احتجاجی مظاہرے اب ’آزادی حامی احتجاجی لہر‘ کی شکل اختیار کررہے ہیں۔ تاہم انتظامیہ کا کہنا ہے کہ صورتحال پوری طرح سے کنٹرول میں ہے اور وادی کے بیشتر تعلیمی اداروں میں درس و تدریس کی سرگرمیاں معمول کے مطابق جاری ہیں۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز کو پرتشدد احتجاج کے مرتکب ہونے والے طالب علموں سے نمٹنے کے دوران حتی الامکان صبر وتحمل کا مظاہرہ کرنے کے لئے کہا گیا ہے۔

Title: students continue protests in kashmir | In Category: کشمیر  ( kashmir )

Leave a Reply