وادی کشمیر کے بڈگام اور اننت ناگ اضلاع میںطلبا و سیکورٹی فورسز میں جھڑپیں، کئی زخمی

سری نگر: وادی کشمیر میں 15 اپریل کو سیکورٹی فورسز کی جانب سے ڈگری کالج پلوامہ میں طالب علموں کے خلاف طاقت کے استعمال کے بعد اسکولوں اور کالجوں میں شروع ہونے والا احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ تھمنے کا نام ہی نہیں لے رہا ہے۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق جمعرات کو جہاں وسطی ضلع بڈگام کے ماگام اور شمالی کشمیر کے لنگیٹ و ایپل ٹاون سوپور میں مختلف تعلیمی اداروں کے طلبائ نے سیکورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپیں کیں، وہیں جنوبی ضلع اننت ناگ کے ڈورو میں طالب علموں کی جانب سے آزادی حامی اور سیکورٹی فورس مخالف احتجاجی مظاہرے منظم کئے گئے۔طلبائ اور سیکورٹی فورسز کے مابین ہونے والی جھڑپوں میں متعدد طلبا اور سیکورٹی فورس اہلکاروں کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔
دوسری جانب احتجاجی مظاہروں کے خدشے کے پیش نظر سری نگر میں ضلع مجسٹریٹ سری نگر کے احکامات پر مصروف ترین مولانا آزاد روڑ پر واقع سری پرتاب (ایس پی) ہائر سکینڈری اسکول اور وومنز کالج سری نگر میں جمعرات کو درس و تدریس کی سرگرمیاں معطل رہیں۔ان تعلیمی اداروں کے طلبا کی منگل کو سیکورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپیں ہوئی تھیں۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق وسطی ضلع بڈگام کے ماگام میں جمعرات کی صبح طلباءاور سیکورٹی فورسز کے مابین جھڑپیں اس وقت شروع ہوئیں جب ریاستی پولیس اور سی آر پی ایف اہلکار کچھ طالب علموں کو گرفتار کرنے کی غرض سے مبینہ طور پر ڈگری کالج ماگام اور ہائر سکینڈری اسکول ماگام کے مشترکہ احاطے میں داخل ہوگئے۔

Title: students clash with security forces in kashmir valley | In Category: کشمیر  ( kashmir )

Leave a Reply